The news is by your side.

Advertisement

رواں برس مصدقہ ڈینگی کیسز کی تعداد 7471 ہو گئی، اسلام آباد میں وبائی صورت حال

پنجاب میں ڈینگی ایکٹ کے تحت متعدد مقدمات درج، ملک کے دیگر حصوں میں بھی کیسز بڑھنے لگے

اسلام آباد: قومی ادارۂ صحت نے ملک بھر کے ڈینگی کیسز پر رپورٹ تیار کر لی ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ رواں برس کے مجموعی مصدقہ ڈینگی کیسز کی تعداد 7471 ہو گئی ہے، ادھر اسلام آباد 24 گھنٹے میں مزید 223 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملک کے مختلف شہروں میں ڈینگی وائرس کے پھیلاؤ کا سلسلہ تیزی سے جاری ہے، اسلام آباد، راولپنڈی، لاہور، فیصل آباد، پشاور اور سوات میں مزید ڈینگی کیسز سامنے آ رہے ہیں۔

اسلام آباد میں انسدادی اقدامات کے باوجود ڈینگی کیسز کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے، گزشتہ 24 گھنٹوں میں مزید 223 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، پمز اسپتال میں 24 گھنٹے میں 110، ایف جی ایچ میں 15، جب کہ پولی کلینک میں 98 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق کی گئی ہے۔ پمز ذرایع کے مطابق 24 گھنٹے میں مزید 36 مریض اسپتال داخل کیے گئے۔

ادھر قومی ادارۂ صحت نے ملک بھر کے ڈینگی کیسز پر رپورٹ تیار کر لی ہے جو وزارت قومی صحت کو ارسال کی جائے گی، یہ رپورٹ یکم جنوری تا 15 ستمبر کے اعداد و شمار پر مبنی ہے جس کے مطابق رواں برس کے مجموعی مصدقہ ڈینگی کیسز کی تعداد 7471 ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ رواں برس سندھ میں 1998 مصدقہ ڈینگی کیسز سامنے آ چکے ہیں، بلوچستان 1722، پنجاب 1706، خیبر پختون خوا 1103، اسلام آباد 876، آزاد کشمیر میں 66 مصدقہ کیسز سامنے آ چکے ہیں۔

رپورٹ کے مابق بلوچستان کے 2 اضلاع گوادر اور کیچ ڈینگی سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں، پنجاب کے 2 اضلاع لاہور اور راولپنڈی زیادہ متاثر ہیں، پشاور اور اسلام آباد بھی ڈینگی سے زیادہ متاثر شہروں میں شامل ہیں۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ رواں سیزن کے 90 فی صد ڈینگی کیسز میں علامات ظاہر نہیں ہو رہیں۔

ادھر راولپنڈی میں 24 گھنٹوں میں مزید 82 شہری ڈینگی کا شکار ہو گئے ہیں، پنڈی میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 2522 ہو گئی، پوٹھوہار ٹاؤن کے علاقوں میں 54 مزید افراد ڈینگی کا نشانہ بنے، ہولی فیملی، بے نظیر اور ڈی ایچ کیو اسپتالوں میں ڈینگی ایمرجنسی برقرار ہے، الائیڈ اسپتالوں سے 1025 ڈینگی مریضوں کو ڈسچارج کیا جا چکا ہے، تینوں اسپتالوں کے ڈینگی وارڈز میں توسیع کی جا چکی ہے، محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ ڈینگی کریش پروگرام میں افرادی قوت بڑھائی گئی ہے۔

پشاور میں بھی ڈینگی وائرس تیزی سے پھیلنے لگا ہے، پشاور میں ڈینگی کے کیسز کی تعداد 1514 ہو گئی، محکمہ صحت کے پی کا کہنا ہے کہ صوبے بھر کے مقابلے میں پشاور سے مریضوں کی تعداد زیادہ ہے۔ سوات مینگورہ میں بھی مزید 10 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، جس کے بعد سوات میں ڈینگی کیسز کی تعداد 163 ہو گئی۔

بہاولپور کے وکٹوریہ اسپتال میں ایک اور مریضہ میں ڈینگی کی تصدیق ہوئی ہے، اسپتال میں 2 ہفتوں میں ڈینگی وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 28 ہو گئی، ڈائریکٹر اسپتال کے مطابق رواں سال وکٹوریہ اسپتال میں 200 سے زاید ڈینگی کیسز رپورٹ ہوئے۔

فیصل آباد میں رواں سال ڈینگی کے 37 کیس رپورٹ ہوئے، انچارج ڈینگی پروگرام کے مطابق روز 30 سے 35 ڈینگی لاروا برآمد ہو رہے ہیں، گزشتہ رات 2 مریضوں کو الائیڈ اسپتال منتقل کیا گیا، اسلام آباد کے رہایشی عدنان اور شاہد آئسولیشن وارڈ میں زیر علاج ہیں۔

ڈینگی کے تشویش ناک مسئلے کو اسمبلی فورم پر اٹھانے کے لیے مسلم لیگ (ن) کی رکن سعدیہ تیمور نے اسپیکر پنجاب اسمبلی کو خط لکھ کر ڈینگی وائرس پر بحث ایجنڈے میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا۔ ملتان میں ڈپٹی کمشنر کی زیر صدارت ڈینگی مہم کا جائزہ اجلاس منعقد ہوا، جس میں ڈپٹی کمشنر نے نشتر اور چلڈرن کمپلیکس اسپتال سے ڈینگی لاروا ملنے پر برہمی کا اظہار کیا، جب کہ دونوں اسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس کو شو کاز نوٹس بھی جاری کیے گئے۔

دریں اثنا، محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے ڈینگی کے خلاف کارروائی جاری ہے، گلبرگ کی مختلف عمارتوں میں ڈینگی لاروا کی تصدیق پر محکمہ صحت کی ٹیموں نے زیر تعمیر سمیت 2 عمارتیں سیل کر دیں۔ انسداد ڈینگی مہم کینٹ زون لاہور میں انڈور سرویلنس کے دوران 73 گھروں سے ڈینگی لاروا برآمد ہوا جب کہ آؤٹ ڈور سرویلنس کے دوران 4 مختلف جگہوں سے ڈینگی لاروا برآمد ہوا۔

کارروائی کے دوران ڈینگی لاروا برآمد ہونے پر ڈینگی ایکٹ کے تحت انسپکٹر انوائرنمنٹ کی طرف سے متعدد ایف آئی آرز درج کی گئیں، لاروا برآمد ہونے پر انسپکٹر انوائرنمنٹ کی جانب سے کیولری گراؤنڈ، ٹائر شاپ پنجاب سوسائٹی اور الائیڈ اسکول بیدیاں روڈ پر مقدمات درج کیے گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں