The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں زہریلی شراب پینے سے 93 افراد ہلاک، 200 زیرعلاج

نئی دہلی: بھارت میں زہریلی شراب پینے سے 93 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ 200 شہریوں کو اسپتال میں طبی امداد دی جارہی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق بھارتی ریاست آسام کے دو مختلف واقعات میں زہریلی شراب پینے کے نتیجے میں 93 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ 200 افراد اسپتال میں زیرعلاج ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ آسام کے علاقے گولہ کھٹ میں زہریلی شراب پینے سے 55 افراد ہلاک ہوئے، جورہٹ میں 38 افراد زہریلی شراب کا شکار بنے، ہلاک اور زخمی ہونے والوں میں بڑی تعداد خواتین کی بھی ہے۔

زہریلی شراب کی فروخت کی روک تھام میں ناکامی پر دو مقامی افسران کو معطل کردیا گیا

وزیراعلیٰ آسام نے دونوں واقعات کی تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے ذمہ داروں کو منطقی انجام تک پہنچانے کا حکم دیا ہے جس کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ایک شخص کو گرفتار کرلیا ہے۔

دوسری جانب محکمہ ایکسائز نے بھی انکوائری کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے زہریلی شراب کی فروخت کی روک تھام میں ناکامی پر دو مقامی افسران کو معطل کردیا ہے۔

مزید پڑھیں: بھارت میں زہریلی شراب پینے سے 92 افراد ہلاک

واضح رہے کہ دو ہفتے قبل بھی اترپردیش اور اترکھنڈ میں ایک ہی دن میں زہریلی شراب پینے سے 92 سے زائد افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

 اس سے قبل بھی بھارت میں زہریلی شراب پینے سے ہلاکتوں کے متعدد واقعات رونما ہوچکے ہیں جبکہ پولیس ان واقعات کی روک تھام میں ناکام ہوچکی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں