علیم خان کو چیئرمین نیب کی ناراضی پر گرفتار نہیں کیا گیا، ترجمان نیب کی وضاحت
The news is by your side.

Advertisement

علیم خان کو چیئرمین نیب کی ناراضی پر گرفتار نہیں کیا گیا، ترجمان نیب کی وضاحت

لاہور: ترجمان نیب نے وضاحت کی ہے کہ علیم خان کو چیئرمین نیب کی ناراضی پر گرفتار نہیں کیا گیا ہے، علیم خان کی گرفتاری پر منفی پروپیگنڈے کو مسترد کرتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان نیب نے کہا ہے کہ علیم خان کی گرفتاری پر منفی پروپیگنڈے کو مسترد کرتے ہیں، علیم خان کی گرفتاری قانون کے مطابق میرٹ پر کی گئی ہے۔

ترجمان نیب کے مطابق چیئرمین نیب کسی انکوائری یا انویسٹی گیشن پر اثرانداز نہیں ہوتے ہیں، چیئرمین نیب نے علیم خان سے زندگی میں کبھی ملاقات نہیں کی اور نہ ہی کسی خط کی وجہ سے وہ علیم خان سے ناراض ہیں۔

ترجمان نیب نے کہا کہ بدعنوان عناصر کو کٹہرے میں کھڑا کرنے کے لیے کوشاں ہیں، نیب آئین و قانون کے مطابق اپنے فرائض انجام دہی پر یقین رکھتا ہے، چیئرمین نیب انتقامی کارروائی پر یقین نہیں رکھتے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز قومی احتساب بیورو کی جانب سے گرفتاری کے بعد علیم خان نے سینئر صوبائی وزیر بلدیات کی وزارت سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

مزید پڑھیں: علیم خان نو روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد آج علیم خان کو 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما کی گرفتاری کے بعد گزشتہ روز نیب کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا تھا کہ قومی احتساب بیور نے علیم خان کو مبینہ طور پرآمدن سے زائد اثاثے بنانے کے الزام میں گرفتار کیا۔

یاد رہے کہ پنجاب حکومت کا حصہ بننے سے قبل علیم خان نے دعوی ٰ کیا تھا کہ ان کے خلاف دس اداروں میں تحقیقات ہوئی ہیں، 130 مختلف دستاویزات جمع کروا نے کا بھی دعویٰ کیا تھا، ایک موقع پر علیم خان نے کہا تھا کہ یا تو انہیں گرفتار کیا جائے یا پھر ان کے خلاف مقدمات ختم کیےجائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں