اورنج لائن ٹرین منصوبہ سفید ہاتھی ہے، مجبوری میں چلائیں گے: علیم خان -
The news is by your side.

Advertisement

اورنج لائن ٹرین منصوبہ سفید ہاتھی ہے، مجبوری میں چلائیں گے: علیم خان

لاہور: صوبائی وزیر برائے بلدیات علیم خان کا کہنا ہے کہ اورنج لائن بالکل بند نہیں ہو رہی، ٹرین چلانے پر سالانہ 120 ارب روپے دینا پڑیں گے۔ منصوبہ سفید ہاتھی ہے، مجبوری میں چلائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صوبائی وزیر برائے بلدیات علیم خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان قصور وار ہیں تو قومی ادارہ احتساب (نیب) کو ڈکلیئر کرنا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ میں قصور وار ہوں تو بھی نیب کو ڈکلیئر کرنا چاہیئے، میں نے ایسا کیا تیر مارا ہے جو 4 سال سے کیس جاری ہے، کرپشن الزامات کی تحقیقات مقررہ مدت کے دوران ہونی چاہیئے۔ نیب آزادانہ طور پر کیسز کی تحقیقات کر رہا ہے۔

علیم خان کا کہنا تھا کہ 2015 سے 2019 تک میرے خلاف انکوائری مکمل نہ ہوسکی، میرے خلاف جو بھی معاملہ ہے کلیئر ہو کر سامنے آنا چاہیئے، اگر قصور وار نہیں ہیں تو کیس کو بند کر دینا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ اورنج لائن بالکل بند نہیں ہو رہی، ہمارے بادشاہ خود تو چلے گئے لیکن اس منصوبہ پر عوام کا پیسہ ضائع ہوگا۔ اورنج لائن منصوبہ جون جولائی منصوبہ سفید ہاتھی ہے، مجبوری میں چلائیں گے۔ منصوبہ سفید ہاتھی ہے، مجبوری میں چلائیں گے۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ سالڈ ویسٹ کے باعث زرعی زمین متاثر ہو رہی ہے، سالڈ ویسٹ سب سے بڑا ایشو ہے۔ سالڈ ویسٹ کو توانائی میں تبدیل کرنے کا منصوبہ ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں