The news is by your side.

الجیریا کے صدر عبدالعزیز بوتوفلیخا کا استعفی تسلیم کر لیا گیا، کونسل کی تصدیق

الجزائر : الجیریا کی آئینی کونسل نے بیس برس سے صدارت پر براجمان 82 سالہ صدر عبدالعزیز بوتوفلیخا کا استعفیٰ تسلیم کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سابق صدر عبدالعزیز  بوتوفلیخا گزشتہ 20 برس نے صدارت کی کرسی پر قبضہ جمائے ہوئے تھے، عارضہ قلب میں مبتلا عبدالعزیز نے پانچویں مرتبہ صدارتی الیکشن میں شامل ہونے کی منصوبہ بندی پہلے ہی ترک کردی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ الجیریا کی آئینی کونسل نے پارلیمان کو صدر کی پوزیشن کی دستیابی کے بارے میں باقاعدہ طور پر آگاہ کر دیا ہے۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ الجیرین صدر نے اپنی مستعفی ہوتے ہوئے عوام سے معافی بھی مانگی تھی، ان کا کہنا تھا کہ ’وہ مملکت کی ترقی میں اپنا حصّہ شامل کرنے پر فخر محسوس کرتے تھے لیکن انہیں احساس ہوا کہ وہ اپنی ذمہ داری انجام دینے میں ناکام ہوگئے‘۔

عبدالعزیز بوتوفلیخا کا کہنا تھا کہ انہیں سیاست چھوڑتے ہوئے الجیریا کے مستقبل کے حوالے سے نہ ہی کوئی خوف ہے اور نہ ہی کسی قسم کا کوئی افسوس ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میرے بھائیوں اور بہنوں ’آپ کے شفقت و احترام پر آپ کا شکر گزار ہوں، انسان سے غلطی ہوتی ہے، میں آپ سے ہر غلطی کی معافی مانگتا ہوں‘۔

مزید پڑھیں : الجیرین عوام کا احتجاج، صدرعبدالعزیز 20 سال بعد عہدے سے مستعفی

خیال رہے کہ صدر عبدالعزیز نے ایک روز قبل چھ ہفتوں کے شدید عوامی احتجاج کے نتیجے میں استعفیٰ دیا تھا، الجیریا کے آرمی چیف نے بھی گزشتہ کہا تھا کہ لیفٹیننٹ جنرل احمد صلاح کا کہنا تھا کہ ’عبدالعزیز مزید اپنی ذمہ داریاں انجام دینے کے قابل نہیں ہیں انہیں وقت ضائع نہیں کرنا چاہیے‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں