The news is by your side.

Advertisement

والد کے دور میں اسامہ بن لادن کی ہلاکت اغوا کی وجہ بنی، علی حیدرگیلانی

کراچی : یوسف رضاگیلانی کے بیٹے علی حیدرگیلانی کا کہنا ہے کہ والد کے دور میں اسامہ بن لادن کی ہلاکت اغوا کی وجہ بنی، پاکستان اورافغانستان میں رکھا گیا تشدد نہیں ہوا۔

یوسف رضاگیلانی کے بیٹے علی حیدرگیلانی نے برطانوی نشریاتی ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ القاعدہ میرے بدلے ایمن الظواہری کے رشتہ داروں کی رہائی اور رقم چاہتی تھی، اغوا کے بعد ڈھائی مہینے تک فیصل آباد میں رکھا اور پھر وزیرستان منتقل کیا گیا۔

علی حیدر گیلانی نے بازیابی کے بعد پہلے انٹرویو میں اپنی داستان سنادی، انکا کہنا ہے کہ اغواکاروں نے اپنا تعارف القاعدہ کے طور پر کروایا اور کہا کہ آپ ہمارے دشمن ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ وہ 3 سال تک القاعدہ کے قبضے میں رہے تھے اور کراچی سے تعلق رکھنے والا القاعدہ کا ایک اہم رکن ضیاء ان کے ساتھ 3 سال تک رہا۔

انھوں نے بتایا کہ اغوا کے بعد پہلے انہیں فیصل آباد میں رکھا اور پھر بنوں کے راستے وزیرستان منتقل کیا، وزیرستان سے اسی سال افغانستان لے جایا گیا تھا، انہوں نے بتایا کہ قید کے دوران القاعدہ نے تشدد نہیں کیا لیکن دباؤ میں ضرور رکھا۔

بازیابی کے آپریشن کا ذکر کرتے ہوئے علی حیدر گیلانی نے کہا کہ نو مئی کا دن تھا القاعدہ کا آدمی آیا اور کہا کہ آج چھاپہ پڑے گا۔ میرے اغوا کار نے پہلے کہا “لیٹ جاؤ ” میں لیٹ گیا پھر کہا “بھاگو” میں اغوا کاروں کے ساتھ بھاگنے کی بجائے دوسری سمت میں دوڑا دوسری سمت بھاگنے کا فیصلہ درست ثابت ہوا اور میں بازیاب ہوگیا۔

پکڑے جانے کے بعد امریکی فوجی سے اپنا تعارف کروایا اور کہا میں پاکستان کے سابق وزیر اعظم کا بیٹا ہوں ۔ تو وہ حیران ہوا۔ پھر اس نے اپنے ہیڈکوارٹر سے رابطہ کیا اور منٹوں میں تصدیق ہونے کے بعد اس نے مجھ سے کہا۔ مسٹر گیلانی یو آر گوئنگ ہوم.

یاد رہے کہ علی حیدر گیلانی کو 9 مئی 2013 کو عام انتخابات سے 2 روز قبل ملتان سے اغواء کیا گیا تھا، جنھیں گذشتہ ماہ 10 مئی کو افغان اور امریکی فورسز نے مشترکہ آپریشن کے ذریعے افغان صوبے پکتیکا سے بازیاب کروایا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں