The news is by your side.

Advertisement

عدالت میں سخت سوالات پر میشا شفیع نے کیا جواب دیے؟ جانیے

سیشن عدالت نے گلوکار علی ظفر کی جانب سے دائر ہتک عزت کیس میں میشا شفیع کو جرح ‏مکمل کروانے کے لیے آٹھ جنوری کو طلب کر لیا ۔ میشا شفیع نے جیمنگ سیشن کی تعریف کے ‏متعلق اپنے میسج کو تسلیم کر لیا کہتی ہیں کہ مروت میں میسج کیا تھا ۔ ‏

‏ میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت دعوی پر سماعت کےد وران علی ظفر کے وکیل نے جرح کرتے ‏ہوئے کہا کہ جیمنگ سیشن کے وقت روم میں کتنے لوگ تھے۔ میشا شفیع نے کہا کمرے میں 10 ‏سے 15 لوگ تھے۔

وکیل علی ظفر نے کہا کہ اس واقعہ کا کوئی چشم دید گواہ نہیں ہے ، میشا شفیع نے جواب ‏دیاجی ہاں اسکا کوئی چشم دید گواہ نہیں ہے حتی کہ میں بھی اس واقعہ کی چشم دید گواہ نہیں ‏ہوں میں نے بھی اسے محسوس کیا۔

علی ظفر کے وکیل نے کہا کہ آپ نے جیمنگ سیشن کی تعریف میں میسج کیا جس پر میشا ‏شفیع نے کہا کہ علی ظفر نے میری تعریف کی تھی جس پر مروت میں میں نے میسج کیا ۔ میشا ‏شفیع کی علی ظفر سے واٹس ایپ پر کی گئی بات کا پرنٹ عدالت میں پیش کر دیا۔

میشا شفیع نے کہا میں اس چیٹ کو کنفرم نہیں کر رہی کیوں کہ مجھے نہیں پتا کہ یہ ایڈیٹڈ ہے ‏یا نہیں، میں نے یہ بات چیت شکریہ ادا کرنے کے لیے کی تھی ۔ علی ظفر کے وکیل نے پوچھا کہ ‏تالیہ مرزا نامی خاتون نے الزام لگایا کہ آپ کا مختلف ڈائریکٹر اور پروڈیوسر کیساتھ غیر مناسب ‏تعلق ہے، میشا شفیع نے جواب دیامیں نے ضروری نہیں سمجھا کہ میں ایسے الزام کا جواب دوں، ‏میں اسکے الزام کو نہیں مانتی۔

وکیل علی ظفرنےپوچھاآپ نے تالیہ ایس مرزا کے خلاف کوئی قانونی کارروائی کیوں نہیں کی ۔ ‏میشا شفیع نے کہا میرے پاس ہر الزام پر جواب دینے کا وقت نہیں ہے ۔ علی ظفر کے وکیل نے ‏کہامیں یہ کہتا ہوں کہ ایسا کوئی واقعہ نہیں ہے جس میں آپ کو ہراساں کیا گیا۔ ہو سکتا ہے کہ ‏یہ آپ کا خیال ہو علی ظفر کا ایسا کوئی خیال نہ کیا آپ کو کبھی محسوس ہوا ہے کہ علی ظفر ‏آپ کو دوست یا کولیگ سمجھمنے کے علاوہ کوئی دلچسہپی ظاہر کی ہو ۔ ‏

میشا نے کہا میں یہ کہتی ہوں کہ پہلے کی بات کو چھوڑیں لیکن اس رات علی ظفر نے مجھے ‏ہراساں کیا۔ علی ظفر کے وکیل کا کہنا تھا کیا یہ سچ ہے کہ آپ نے ایک پروڈکشن کمپنی کے ‏ساتھ 7 دسمبر 2017 کو معاہدہ کیا، آپ نے بیان دیا تھا کہ آپ علی ظفر کے اسٹوڈیو میں پریکٹس ‏نہیں کرنا چاہتی تھیں۔ پھر آپ اس معاہدہ پر راضی کیوں ہوئیں۔

میشا شفیع کے بیان پر جرح جاری تھی جس پر عدالت نے سماعت ملتوی کرتے ہوئے میشا شفیع ‏کو آٹھ جنوری کو دوبارہ طلب کر لیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں