The news is by your side.

Advertisement

پراسرار گیس سے اموات، علی زیدی اورعبدالقادر پٹیل کے درمیان گرما گرمی

اسلام آباد: قومی اسمبلی قائمہ کمیٹی بحری امور کا میرعامر مگسی کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزیر علی زیدی اور پیپلزپارٹی رہنما عبدالقادر پٹیل کے درمیان گرما گرمی دیکھنے میں آئی۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق وفاقی وزیر علی زیدی کا کہنا تھا کہ گیس کا معاملہ کیماڑی کے اندر پیش نہیں آیا، کیماڑی سے باہر واقعہ پیش آیا تو ذمہ دار سندھ حکومت ہے، عبدالقادر پٹیل کا کہنا تھا کہ 10 روز بعد بھی جواب یہی ہے گیس کی جگہ اور وجہ معلوم نہیں ہے۔

علی زیدی نے کہا کہ اسلام آباد میں کچھ ہوگا تو بھی ذمہ دار وزارت بحری امور ہوگی؟ آپ مجھ پر الزام نہ لگائیں جگہ اور وجوہات کا بتائیں۔

عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ ساری گیس کیماڑی کے ارد گرد کے علاقوں میں ہی کیوں پھیلی، سویابین جہاز سے ان لوڈ کرتے ہوئے گیس دیکھی جاسکتی ہے، ان لوڈنگ شروع کی جاتی لوگ گرنا شروع ہوجاتے تھے، وفاقی حکومت اب بھی وجہ تلاش کررہی ہے۔

اجلاس میں ڈاکٹر عطا الرحمان کی تکنیکی گفتگو کا خط پیش کیا گیا، چیئرمین کے پی ٹی نے کہا کہ ڈاکٹر عطا الرحمان کی گفتگو دنیا میں مختلف واقعات پر مبنی تھی۔

چیئرمین کے پی ٹی کے مطابق سویابین سے ہلاکتیں ہوتیں تو کراچی پورٹ کے ورکر بھی متاثر ہوتے، کیماڑی میں پورٹ کی پٹی ہے مگر وہاں اموات نہیں ہوئیں۔

عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ تین لوگوں کے نمونوں سے پتا چلا سویابین کا اثر ہے جس پر چیئرمین کے پی ٹی کا کہنا تھا کہ مرنے والوں کے پوسٹ مارٹم نہیں ہوئے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں