The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کی طویل ساحلی پٹی قدرتی وسائل سے مالا مال ہے، علی زیدی

کراچی : وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی نے کہا دنیا بھر میں بلیو اکانومی تقریباً 23 ٹرلین ڈالر پر محیط ہے، پاکستان کی طویل ساحلی پٹی قدرتی وسائل سے مالا مال ہے، نئی شپنگ پالیسی سے واضح بہتری آئے گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی ہدایت پر بلیو اکانومی سے متعلق قائم کمیٹی کا پہلا اجلاس ہوا، اجلاس کی صدارت وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی نے کی اجلاس میں وائس چیف آف نیول سٹاف وائس ایڈمرل کلیم شوکت نے شرکت کی جبکہ ریلوے، فوڈ سیکیورٹی، پیٹرولیم سمیت مختلف وزارتوں کے نمائندے بھی شریک تھے۔

اجلاس میں پاکستان کی بلیو اکانومی سے فائدہ اٹھانے کے لئے تجاویز پر مشاورت کی گئی۔

علی زیدی نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں بلیو اکانومی 23 ٹریلین ڈالر پر محیط ہے ، امپورٹ ایکسپورٹ کا سارا انحصار بندرگاہوں پر ہے۔ وزارتوں کے باہمی تعاون سے بلیو اکانومی میں موجود صلاحیتوں سے فائدہ ہوگا۔

وفاقی وزیر بحری امور کا کہنا تھا پاکستان کی طویل ساحلی پٹی قدرتی وسائل سے مالآ مال ہے نئی شپنگ پالیسی سے واضع بہتری آئے گی ماضی میں فشریز کے شعبے کو مکمل طور پر نظر انداز کیا گیا فشریز کو عالمی معیار پر واپس لے کر آئیں گے۔

یاد رہے وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی کا کہنا تھا کہ پاکستانی بندرگاہوں کو لاس اینجلس اور ہیوسٹن کی طرز پر ترقی دیں گے، ملک میں کاروباری ماحول سازگار بنا رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا پاکستانی برادری کو سرمایہ کاری کے لیے آمادہ کر کے زرمبادلہ لائیں گے، پاکستان پہلے سیکیورٹی زون تصور کیا جاتا تھا، اب اکنامک زون بن چکا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں