The news is by your side.

Advertisement

محمد حفیظ نے بولنگ ایکشن جانچنے کا بین الاقوامی قانون غیر منصفانہ قرار دے دیا

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر محمد حفیظ نے بولنگ ایکشن جانچنے کا بین الاقوامی قانون غیر منصفانہ قرار دیتے ہوئے آئی سی سی پر جانب داری کا الزام لگادیا۔

تفصیلات کے مطابق اسٹار آل راؤنڈر نے بولنگ ایکشن کلیئر ہونے کے بعد انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کو نشانے پر لیتے ہوئے کہا کہ کونسل پر طاقت ور بورڈ اثر انداز ہورہے ہیں۔

قومی ٹیم کے سابق کپتان کا کہنا تھا کہ بولنگ ایکشن سے متعلق قانون پر کئی چیزیں اثر انداز ہورہی ہیں، متعدد کرکٹ بورڈز کی طاقت کے سامنے کوئی بولنا نہیں چاہتا۔

آل راؤنڈر نے سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ انسانی آنکھ کیسے محض ایک ڈگری کے فرق کو دیکھ سکتی ہے؟ کھلاڑیوں کو بایو مکینک ٹیسٹ کلیئر کرنے کے بعد انٹرنیشنل کرکٹ میں بولنگ کی اجازت دی جانے چاہیے۔

خیال رہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے اپنی منظور شدہ لیب میں محمد حفیظ کے بولنگ ایکشن کا ٹیسٹ کرنے کے بعد اسے یکم مئی کو کلیئر قرار دے دیا تھا جس کے بعد اب وہ انٹرنیشنل میچز میں بولنگ کراسکیں گے۔

آئی سی سی نے محمد حفیظ کا باؤلنگ ایکشن کلیئرقرار دے دیا


انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق ٹیسٹ کے دوران محمد حفیظ کی تمام گیندوں میں بازو کا خم 15 ڈگری سے کم اور ایکشن بھی قانون کے مطابق رہا تھا۔

واضح رہے کہ محمد حفیظ کا بولنگ ایکشن تین سال میں تیسری بار رپورٹ ہوا جس کے بعد سے انہیں پابندی کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا، گزشتہ سال نومبر میں بھی سری لنکا کے خلاف میچ میں ان کا بولنگ ایکشن رپورٹ ہوا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں