The news is by your side.

Advertisement

پنڈی اسلام آباد کی سڑکوں پرجمہوریت کو گھسیٹا گیا، ڈاکٹرطاہرالقادری

اسلام آباد : تحریک انصاف کے کارکنان پر پولیس تشدد اور گرفتاریوں کی پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ راولپنڈی اور اسلام آباد کی سڑکوں پرجمہوریت کو گھسیٹا گیا، ان کا کہنا ہے کہ عمران خان اور شیخ رشید کا جرم بتایا جائے، ان دونوں رہنماؤں نے کیا جرم کیا کہ ان پر اپنے ہی وطن کی زمین تنگ کی جارہی ہے۔

اردن سے لندن پہنچے پر ائیر پورٹ پر گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن نہیں حکمرانوں کا ’’ناک ڈاؤن‘‘ چاہتا ہوں ادارے حکمرانوں کی گرفت میں قصائی کے ہاتھ میں مرغی کی طرح ہیں ۔تحریک انصاف کے کارکنوں بالخصوص خواتین پر تشدد کی سو بار مذمت کرتا ہوں۔

لال حویلی اور بنی گالا سمیت پورے ملک میں پر امن سیاسی کارکنوں پر تشدد ،ظلم اور بربریت قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانامہ کے ڈاکو اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قاتل بوکھلاہٹ کا شکار ہیں ،دفعہ144کا اطلاق چار دیواری کے اندر نہیں ہوتا، یہ شریف برادران کا طریقہ واردات ہے جب ان کو کوئی خطرہ ہوتا ہے تو یہ خوف و ہراس پھیلاتے ہیں۔

ماڈل ٹاؤن میں بھی انہوں نے خون کی ہولی کھیلی تھی، ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے کہ راولپنڈی کی سڑکوں پر جمہوریت کو گھسیٹا اور خواتین کے منہ پر تھپڑ مارے جارہے ہیں۔

ماڈل ٹاؤن میں شہید ہونیوالی دو بیٹیوں تنزیلہ اور شازیہ کے قاتلوں کو سزا مل جاتی تو مزید کسی بیٹی پر کوئی ہاتھ نہ اٹھاتا۔ انہوں نے بتایا کہ تحریک انصاف کا وفد ہمارے رہنماؤں سے ملا ہے ،صورتحال پر نظر ہے۔

کور کمیٹی کا اجلاس آج ہو گا، مجھے رپورٹ بھجوائی جائے گی، احتجاج کے حوالے سے مزید فیصلے ہوں گے کہ کس سطح کی شرکت درکار ہے ،حکمران بد ترین آمر ہیں ،یہ ملک میں سلطنت شریفیہ کا قیام چاہتے ہیں۔

جب تک یہ اقتدار میں رہیں گے ملک کی خیر نہیں ۔ طاہر القادری کا کہنا ہے کہ کیا ملکی اداروں کا کام سیاست کے کرپٹ کرداروں کو تحفظ دینا رہ گیا، حکمران مافیا ہیں ان سے نجات حاصل کرنا ضروری ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں