The news is by your side.

رکن قومی اسمبلی پر خاتون کو ہراساں کرنے کا الزام، انصاف کی اپیل

کراچی: ایم کیو ایم پاکستان کے رکن قومی اسمبلی سلمان مجاہد بلوچ پر ایک لڑکی نے ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا ہے، متاثرہ خاتون کا کہنا ہے کہ یہ درندہ میرے پیچھے پڑا ہے، انسانیت کے ناطے مجھے انصاف دلایا جائے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ دنوں پاک سرزمین پارٹی کو خیرباد کہہ کر ایک بار پھر ایم کیو ایم پاکستان (فاروق ستار) میں شمولیت اختیار کرنے والے رکن قومی اسمبلی سلمان مجاہد بلوچ کی مشکلات میں روز بہ روز اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

تحریک انصاف کے مرکزی کارکن پر اسلحہ تاننے کے بعد رکن قومی اسمبلی کے خلاف نیا تنازع اُس وقت سامنے آیا کہ جب ایک لڑکی انصاف کی فریاد لے کر انسانی حقوق کے سرگرم ادارے کے سربراہ صارم برنی کے پاس پہنچی۔

مذکورہ خاتون نے صارم برنی کو درخواست دی کہ سلمان مجاہد نے مجھے بلیک میل کر کے زیادتی کا نشانہ بنایا اور 30 اکتوبر 2017 کو اغوا بھی کیا، میرے بھائی کو بھی گھر سے لے جاکر تشدد کر کے باہر پھینک گئے۔

مزید پڑھیں: قاتل کے ساتھ نہیں فاروق ستار کے ساتھ ہوں، سلمان مجاہد کی دوبارہ شمولیت

خاتون نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ سلمان مجاہد بلوچ نے کہا اگر کہیں آواز اٹھائی تو تمھاری ویڈیو وائرل کردوں گا اور والدہ پر پستول رکھ کر کہا کہ یہ میری بات کیوں نہیں مان رہی؟۔

درخواست میں لڑکی نے صارم برنی سے انصاف کی اپیل کرتے ہوئے قانونی مدد طلب کی اور یہ بھی انشاف کیا کہ کچھ لوگ 17 جنوری 2018 کو میرے گھر میں زبردستی داخل ہوئے جبکہ اس سے قبل 30 اکتوبر کو میرے بھائی پر بھی تشدد ہوچکا ہے۔

صارم برنی ٹرسٹ کے سربراہ کا کہنا ہے کہ مذکورہ لڑکی کی درخواست موصول ہوگئی ہے جس میں اُس نے رکن قومی اسمبلی کو درندہ قرار دیتے ہوئے الزام عائد کیا کہ وہ شخص اس بچی کو زیادتی کا نشانہ بھی بناتا رہا۔

اُن کا کہنا ہے کہ لڑکی نے یہ بات بھی بتائی کہ سلمان مجاہد نے خفیہ طور پر شادی کی اور پھر کچھ عرصے بعد ہوس پوری کرنے کے ساتھ ہی طلاق بھی دے دی، اگر منتخب نمائندے عوام کے ساتھ یہ رویہ رکھیں گے تو قوم کا کیا ہوگا؟۔

متاثرہ خاتون کی جانب سے گلشن اقبال تھانے میں مقدمہ درج کروایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: فاروق ستار کو کل تھپڑ مارا گیا، سلمان مجاہد بلوچ کا دعویٰ

صارم برنی کا کہنا ہے کہ لڑکی نے کئی بار مقدمہ درج کرنے کی کوشش کی مگر کئی ماہ گزر جانے کے باوجود بھی پولیس نے کوئی ایف آئی آر درج نہیں کی زور دینے پر پولیس نے لڑکی کو  الٹا گرفتار کرلیا تھا۔

دوسری جانب ایم کیو ایم کے رکن قومی اسمبلی سلمان مجاہد بلوچ نے مؤقف اختیار کیا کہ ’میری درخواست عدالت میں زیر سماعت ہے، خاتون نے ماں کے کینسر کا کہہ کر 40 لاکھ روپے لیے اور اب ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کرلی‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ خاتون نے 4 جنوری کو میرے خلاف درخواست جمع کرائی جبکہ میں نے خاتون کیخلاف درخواست 16جنوری کو جمع کرائی تھی ، میرے خلاف خاص مقصد کے تحت سازش کی جارہی ہے۔

وزیرداخلہ سندھ کا نوٹس

اے آر وائی پر خبر نشر ہوئی تو وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے صارم برنی سے رابطہ کیا اور مکمل تعاون کی یقین دہانی کرواتے ہوئے تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دے دی۔

وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ تحقیقاتی کمیٹی واقعے کی مکمل تفتیش کر کے رپورٹ پیش کرے گی جس کے بعد تمام تر حقائق جلد سامنے لائے جائیں گے۔

سلمان مجاہد کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے، علی زیدی پی ٹی آئی

بعد ازاں اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما علی زیدی کا کہنا تھا کہ ’متاثرہ لڑکی کی مدد کرنا چاہتا ہوں، انسانی حقوق کے معاملے پر سیاست نہیں کرنی چاہیے اور رکن قومی اسمبلی کے خلاف جلد ایف آئی آر درج ہونی چاہیے‘۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں