The news is by your side.

لاہورہائی کورٹ میں الطاف حسین کی جانب سے بیان حلفی جمع

لاہور : الطاف حسین پابندی کیس میں الطاف حسین کی جانب سے لاہورہائی کورٹ میں بیان حلفی جمع کروا دیا گیا۔

الطاف حسین کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ انہوں نے فوج کیخلاف بیان بازی نہیں کی، ان کے بیانات کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق الطاف حسین کی جانب سے بیان حلفی جمع کروایا دیاگیا، لاہور ہائی کورٹ کے تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔

بیان حلفی میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے کبھی پاک فوج کے خلاف بیان بازی نہیں کی، انکے بیانات کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا، جس کی وضاحت وہ مختلف مواقع پر کر چکے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ وہ بھی پاک فوج کی اتنی ہی عزت کرتے ہیں جتنی کوئی اور پاکستانی کرتا ہے، تاہم جب ایم کیو ایم کو غدار کہا جاتا ہے تو اس پر انہیں دکھ ہوتا ہے۔

الطاف حسین کے مطابق عدالت کی جانب سے پابندی بنیادی حقوق کے خلاف ہے لہٰذا اسے واپس لیا جائے .

وزارت داخلہ کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ الطاف حسین دہری شہریت رکھتے ہیں تاہم ان کے پاس پاکستان کا شناختی کارڈ یا پاسپورٹ نہیں ہے.

عدالت نے الطاف حسین کے بیان حلفی اور حکم امتناعی کے خلاف درخواست پر وکلاء کو 9 اکتوبر کو طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی .

سماعت کے بعد وکلاء نے احاطہ عدالت میں عاصمہ جہانگیر اور الطاف حسین کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں