The news is by your side.

Advertisement

نئے امیر کویت کا اہم فیصلہ

کویت سٹی : کویت کے امیر نے وزیراعظم کے استعفے کو نامنظور کرتے ہوئے پارلیمانی انتخابات کی تیاری کرنے کی ہدایت کی ہے، ان کا کہنا ہے کہ ہمیں موجودہ حکومت کی کارکردگی پر اعتماد ہے۔

کویت کے ذرائع ابلاغ کے مطابق امیر کویت شیخ نواف الاحمد الجابر الصباح نے وزیراعظم شیخ صباح خالد الحمد الصباح کا استعفیٰ منظور نہیں کیا اور ان پر اپنے بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کام جاری رکھنے کی ہدایت کردی۔

امیر کویت نے شیخ صباح خالد الحمد الصباح کو ہدایت کی ہے کہ وہ رواں سال ہونے والے پارلیمانی انتخابات کی تیاری کریں، اور حکومتی امور حسب سابق احسن طریقے سے نمٹائیں۔

اس حوالے سے کویتی میڈیا نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ وزیراعظم شیخ صباح نے منگل کو قصر بیان میں امیر کویت سے ملاقات کی اور ناگزیر وجوہات کی بنا پر انہیں ملکی آئین کے مطابق اپنا اور کابینہ کا استعفی پیش کیا تھا۔

ذرائع کے مطابق امیر کویت شیخ نواف نے کویتی وزیراعظم اور کابینہ کے ارکان کی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ آپ اپنے فرائض احسن طریقے سے انجام دے رہے ہیں۔ موجودہ حکومت کی کارکردگی پر اعتماد ہے، حکومتی وزراء اپنے آئینی فرائض اور ذمہ داریاں اسی طرح انجام دیتے رہیں۔

امیر کویت نے حکومت کو ملک میں جمہوریت کا سفر جاری رکھنے اور آئینی حقوق اور آزادیوں کے کاررواں کو آگے بڑھانے کے لیے پارلیمانی انتخابات کی تیاریاں جاری رکھنے کی ہدایت دی ہے۔

امیرکویت نے مزید کہا کہ آئین اور ملکی قوانین کے بموجب وطن عزیز کی سربلندی اور ترقی کے سلسلے میں اپنا فرض اور ذمہ داری احسن طریقے سے انجام دیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کویت کے ولی عہد شیخ نواف الاحمد الصباح کو ریاست کا نیا امیر نامزد کیا گیا ہے۔

کویت کی کابینہ نے مرحوم امیرکویت شیخ صباح الاحمد الصباح کی وفات کے بعد شیخ نواف کو نیا امیر مقرر کرنے کا اعلان کیا تھا، انھیں 2006ء میں خلیجی ریاست کا ولی عہد مقرر کیا گیا تھا۔اسی سال شیخ صباح کویت کے امیر بنے تھے۔

کویت کے آئین کے تحت ملک کے نئے ولی عہد کی نامزدگی کی قومی اسمبلی سے کثرت رائے سے منظوری ضروری ہے، روایتی طور پرشیخ مبارک الصباح کی اولاد سے تعلق رکھنے والی شخصیات ہی کو ولی عہد اور امیر مقرر کیا جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں