The news is by your side.

Advertisement

’’امریکا نے بہت دیر کردی‘‘

جنیوا: عالمی ادارہ صحت کی خاتون ڈاکٹر مارگیرٹ کا کہنا ہے کہ کروناوائرس کو روکنے کے لیے اقدامات کرنے میں امریکا نے بہت دیر کردی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکا نے نئی سفری پابندی عائد کی ہے جس کے تحت کوئی بھی یورپی ممالک سے شہری امریکا میں داخل نہیں ہوسکے گا۔

اسی تناظر میں گفتگو کرتے ہوئے مایہ ناز خاتون ڈاکٹر نے بتایا کہ اس طرح کی امریکی پابندیوں سے کچھ خاص حاصل نہیں ہوگا کیوں کہ ٹرمپ انتظامیہ نے اقدامات اٹھانے میں بہت دیر کردی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکا نے اس وقت مذکورہ پابندی عائد کی کہ جب وائرس ملک میں داخل ہوچکا ہے اور ایک دوسرے میں منتقل ہورہا ہے، سفری پابندی اس وقت کار آمد ہوتی کہ جب کروناوائرس کا آغاز ہوا تھا۔

کرونا وائرس: ٹرمپ نے یورپ سے امریکا سفر پر پابندی لگا دی

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مہلک وائرس کو مزید پھیلنے سے روکنے کے لیے یورپ سے امریکا سفر پر 30 روز کے لیے پابندی لگادی ہے، برطانیہ کو پابندی سے استثنٰی حاصل ہے۔

دوسری جانب یورپی یونین کمیشن نے امریکا کی عائد سفری پابندی مسترد کردی۔ یورپی حکام کا کہنا ہے کہ امریکا نے سفری پابندیاں بغیر مشاورت اور یک طرفہ طور پر عائد کیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں