The news is by your side.

Advertisement

پہلی ہندو خاتون کا امریکا کے صدارتی انتخابات میں حصّہ لینے کا ارادہ

واشنگٹن : بھارتی نژاد امریکی خاتون ایم پی تلسی گبّارڈ نے سنہ 2020 میں ہونے والے امریکی انتخابات میں حصّہ لینے کا ارادہ ظاہر کردیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی سیاست تلسی گبّارڈ پہلی ہندو ایم پی ہیں جنہوں نے صدارتی انتخابات میں حصّہ لینے کا عزم کیا ہے جس کے باعث وہ دنیا بھر میں تیزی سے مشہور ہورہی ہیں۔

امریکی پارلیمنٹ میں ریاست ہوائی کی نمائندگی کرنے والی ڈیموکریٹ تلسی گبّارڈ نے بدھ کے روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ وہ آئندہ صدارتی انتخابات میں امیدوار کی حیثیت سے شرکت کرنے پر غور کررہی ہیں۔

تلسی گبّارڈ کا کہنا تھا کہ ’میں سنجیدگی اس پر توجہ کررہی ہوں اور میں اپنے ملک کی صورتحال کے حوالے سے پریشان ہوں، میں اس بارے میں بہت سنجیدگی سے سوچ رہی ہوں‘۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ اگر تلسی گبّارڈ امریکی صدارتی الیکشن میں حصّہ لیتی ہیں تو وہ امریکی تاریخ میں صدارتی انتخابات میں شرکت کرنے والی پہلی ہندو خاتون ایم پی بن جائیں گی۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ تلسی گبّارڈ امریکا کی پہلی ہندو خاتون اور نوجوان صدر منتخب ہوسکتی ہیں لیکن انہیں پہلے ریپبلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کو شکست دینی ہوگی۔

امریکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ بھارتی نژاد ہندو سیاست دان کو سنہ 2020 میں صدارتی انتخابات میں حصّہ لینے قبل ڈیموکریٹ امیدواروں کو پارٹی الیکشن میں شکست دینی ہوگی، جو صدارتی الیکیشن سے پہلے ہوں گے۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ تلسی اس سلسلے میں گذشتہ کچھ ہفتوں سے ڈیموکریٹ پارٹی کے سربراہوں سے گفتگو کررہی ہیں اور امریکا میں مقیم بھارتیوں سے رابطہ کررہی ہیں تاکہ ان کا ردعمل جان سکیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں