The news is by your side.

Advertisement

امجد صابری قتل کیس : گواہوں نے دونوں قاتلوں کو شناخت کرلیا

کراچی : امجد صابری قتل کیس میں مقدمے کا چالان منظور کرتے ہوئے عدالت نے ملزمان کو پیش کرنے کا حکم دے دیا، پولیس نے چالان کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کردیا، چالان میں چار چشم دید سمیت ستائیس گواہان شامل ہیں۔ عدالت نے مقدمے کی سماعت کل 29 دسمبر تک ملتوی کردی۔

تفصیلات کے مطابق پولیس نے امجد صابری قتل کیس کاچالان انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کردیا ہے، چالان میں چار چشم دید سمیت ستائیس گواہان شامل ہیں، جنہوں نے ملزمان عاصم کیپری اور اسحاق بوبی کو شناخت کیا۔

پولیس چالان کے مطابق امجد صابری کا قتل فرقہ وارانہ واردات تھی، ملزمان نے اسٹیٹ ایجنٹ کے ذریعے مقتول امجد صابری کے گھر کے قریب مکان کرائے پر لیا تھا، عدالت نے چالان منظور کرتے ہوئے ملزمان کو پیش کرنے کا حکم دیدیا۔ امجد صابری کو رواں سال جون میں قتل کیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں : معروف قوال امجد صابری قاتلانہ حملے میں جاں بحق

علاوہ ازیں امجد صابری کی بیوہ نے مقتول کی گاڑی کی واپسی کیلیے عدالت سے رجوع کیا ہے، درخواست میں ان کا مؤقف ہے کہ مذکورہ گاڑی امجد صابری کے نام نہیں بلکہ میرے نام پر ہے، پولیس ضابطے کی کارروائی مکمل کرچکی ہے، لہٰذا گاڑی واپس دلوائی جائے۔

مزید پڑھیں: امجد صابری کے قاتلوں کا تعلق سیاسی جماعت سے نہیں، راجہ عمر خطاب

یاد رہے کہ امجد صابری کو 22 جون کو کو قتل کردیا گیا تھا،قتل کےبعد پولیس نے ہنڈا سوک بی ای ای 797 قبضے میں لے لی تھی۔

مزید پڑھیں : قاتلوں کو گھرکے سامنے پھانسی دی جائے، امجد صابری کے بھائی کا مطالبہ

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں