The news is by your side.

Advertisement

ایمنسٹی اسکیم کا آخری روز، قومی خزانے کو کتنا فائدہ ہوا؟

ایمنسٹی اسکیم میں تو تیس جون کو ایک ماہ کی توسیع کی گئی تھی

کراچی / اسلام آباد: فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے ترجمان نے کہا ہے کہ ایمنسٹی کا آج آخری روز ہے، اب تک مجموعی طور پر 65 ہزار افراد نے اسکیم سے استفادہ کیا اور قومی خزانے کو اربوں روپے وصول ہوئے۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے جاری بیان کے مطابق پیرکی رات تک 65 ہزار افراد نےایمنسٹی اسکیم سےفائدہ حاصل کیا، 59 ہزار افراد نے مقامی جبکہ 6 ہزار نے بیرونِ ملک اثاثے ظاہر کیے۔

ترجمان ایف بی آر کے مطابق ایمنسٹی اسکیم سے مجموعی طورملکی خزانے کو 110 ارب روپے کا ٹیکس حاصل ہوا جبکہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے 123 ارب روپے کی ٹیکس وصولی کا ہدف بنایا تھا۔

مزید پڑھیں: ٹیکس ایمنسٹی اسکیم: 102 ارب روپے کے ٹیکس وصول

ترجمان ایف بی آر نے ایک بار پھر وضاحت دی کہ ایمنسٹی اسکیم میں تاریخ کی توسیع کا کوئی ارادہ نہیں اور نہ ہی فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے پاس اس کا اختیار ہے۔

خیال رہے کہ ملک کے ٹیکس چوروں اور چوری کے پیسے سے بیرون ملک اثاثے بنانے والوں کو گزشتہ حکومت کی جانب سے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے تحت موقع دیا گیا تھا کہ وہ اپنے اثاثوں پر ٹیکس ادا کردیں۔

ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے روح رواں سابق مشیر برائے خزانہ مفتاح اسماعیل تھے، اسکیم کے لیے ایوان ہائے تجارت وصنعت، ایسوسی ایشن بلڈرز اینڈ ڈویلپرز اور دیگر تجارتی انجمنیں مطالبہ کر رہی تھیں۔

یہ بھی پڑھیں: ایمنسٹی اسکیم نہ آتی تو خسارہ زیادہ ہوتا، ڈاکٹر شمشاد اختر

اسکیم کو 30 جون کو ہی ختم ہوجانا تھا مگر یکم جولائی 2018 کو صدر مملکت ممنون حسین نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم میں 31 دن کی توسیع کے آرڈیننس پر دستخط کیے اور اس کی معیاد کو 31 جولائی رات 12 بجے تک بڑھتے ہوئے صارفین کو موقع فراہم کیا گیا تھا کہ وہ مقررہ تاریخ تک ایف بی آر کو ذرائع آمدن ظاہر کیے بغیر اثاثے ظاہر کرلیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں