The news is by your side.

بیروزگار شہری کو نوادرات سے بھرا برتن راستے میں پڑا ملا، پھر کیا ہوا؟

بیروزگار شہری کو سنسان سڑک پر نوادرات سے بھرا ایک برتن نے ملا تو اس نے ایمانداری کی اعلیٰ مثال قائم کرتے ہوئے اسے حکومت کے حوالے کردیا

یہ واقعہ اردن میں پیش آیا جہاں ایک بیروزگار شہری محمد بنی سلمان کو یہ قیمتی برتن ملا۔

عرب میڈیا کے مطابق بنی سلمان نے بتایا کہ گزشتہ جمعے شمالی کمشنری عجلون میں وہ صبح سویرے ایک سڑک سے گزر رہا تھا کہ اسے راستے میں چمکتی چیز نظر آئی جب میں قریب گیا تو وہ ایک مٹی کا برتن تھا تاہم اس میں قیمتی نوادرات موجود تھیں۔

بنی سلمان کے مطابق جب بھی کسی شہری کو سونے کا کوئی ٹکڑا یا نوادر نظر آئے تو اس کا فرض ہے کہ وہ اسے متعلقہ حکام کے حوالے کر دے اور اس نے بھی ایسا ہی کیا ہے۔

اس حوالے سے محکمہ آثار قدیمہ نے نوادر کا معائنہ کرکے ابتدائی رپورٹ عجلون پرائمری کورٹ کے حوالے کی ہے۔

محکمے کے ڈائریکٹر جنرل فادی بلعاوی کے مطابق ملنے والے نوادرات کی تعداد 541 ہے اور اس میں کوئی بھی سونے کا نہیں ہے، ان میں بعض پرانے جب کہ کئی نئے اور نقلی بھی ہیں۔
محکمہ آثار قدیمہ کے ڈائریکٹر جنرل نے بتایا کہ 541 نوادر ملے ہیں ان میں سے کوئی بھی سونے کا نہیں۔ ان میں بعض پرانے ہیں۔ کئی نئے ہیں اور نقلی بھی ہیں۔

برتن میں ملنے والی چیزوں میں ایک چراغ اور ایک مٹی کی ہانڈی بھی شامل ہے، یہ ہانڈی کانسی کے وسطی دور کی ہے۔ اس میں سکے بھی ہیں، یہ کس دور کے ہیں اس کا معلوم کرنے کے لیے اس پر کام کرنا ہوگا اور انہیں مناسب طریقے سے صاف کرنے کی ضرورت ہے۔

ڈی جی محکمہ آثار قدیمہ کے مطابق ان میں کچھ نئے سکے بھی ملے ہیں بعض نئے اور جعلی سکے بھی ہیں، مختلف دھاتوں کے ٹکڑے بھی ملے ہیں اور ایسا لگتا ہے کہا کہ ایک سے زیادہ جگہ سے یہ جمع کرکے یکجا کر دیے گئے ہیں۔

محکمہ آثار قدیمہ کے ڈائریکٹر جنرل فادی بلعاوی کا کہنا ہے کہ محکمے کے افسران عجلون کمشنری سے ملنے والے نوادر عدالتی کارروائی کے ذریعے وصول کریں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں