The news is by your side.

Advertisement

سفاک ماں کا شیرخوار پر بہیمانہ تشدد! خاتون ویڈیو بھی بناتی رہی

نئی دہلی : شوہر سے علیحدگی کے بعد خاتون نے 18 ماہ کے بچے کو بدترین تشدد کا نشانہ بنا ڈالا، جس کی ویڈیو نے دیکھنے والوں کو ہلا کر رکھ دیا۔

بھارت میں کرونا وائرس کی دوسری لہر نے بھارتی شہریوں کو صرف جانی نقصان ہی نہیں پہنچایا بلکہ شدید مالی بحران سے بھی دوچار کیا ہے جس کا نتیجہ گھریلو تشدد کی صورت میں بھی سامنے آرہا ہے لیکن ابھی جو حالیہ واقعہ گھریلو تشدد کا پیش آیا اس میں کرونا کا عمل دخل نہیں بلکہ اعتماد کا مسئلہ ہے۔

شادی کے بعد اپنے سسرال تامل ناڈو میں رہنے والی 22 سالہ خاتون تلسی کے شوہر نے اسے دوسرے مرد سے فون پر بات کرتے سن لیا تھا اور جب یہ دھوکے بازی بڑھی تو دونوں کے درمیان جھگڑا ہونے لگا۔

بات زیادہ بڑھی تو تلسی کے شوہر نے اسے آندھرا پردیش والدین کے گھر بھیج دیا، جس کے بعد تلسی نے اپنے شیر خوار بچوں پر تشدد شروع کردیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بچے پر تشدد کا واقعہ فروری 2021 میں پیش آیا لیکن رپورٹ کئی ماہ بعد اس وقت ہوا جب تلسی کے گھر والوں نے اس کے موبائل فون میں بچے پر بہیمانہ تشدد کی ویڈیوز دیکھیں۔

پولیس نے تلسی کو گرفتار کرکے بچے کو ہراساں کرنے، تشدد کا نشانہ بنانے سمیت متعدد دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ خاتون بچے پر تشدد کرتے ہوئے اپنے موبائل میں ویڈیو بھی ریکارڈ کرتی تھی، جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سفاک ماں اپنے 18 ماہ کے بچے کو لاتھوں اور مکّوں سے مار رہی ہے جس کے باعث بچے کے چہرے اور منہ سے خون بھی بہہ رہا ہے۔

پولیس نے کہا کہ ایک اور ویڈیو میں بچے کی پشت پر تشدد کے متعدد نشانات بھی دیکھے جاسکتے ہیں۔

تلسی کی ماں نے بچے پر تشدد سے لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ اہل خانہ تلسی کی ان حرکات سے ناواقف تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں