The news is by your side.

موبائل فون استعمال کرنے کی سزا، باپ نے بیٹے کا ہاتھ کاٹ دیا

نئی دہلی: بھارتی ریاست حیدرآباد میں مبینہ ظالم باپ نے موبائل فون استعمال کرنے پر اپنے نوجوان بیٹے کا ہاتھ کاٹ دیا، اہلیہ کی درخواست پر پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو حراست میں لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی شہر حیدرآباد میں باپ نے بیٹے کو موبائل فون استعمال کرنے کی عادت ترک کرنے کا مشورہ دیا جو اُس نے نہ مانا اور والد کی حکم ازولی کرتے ہوئے اسمارٹ فون پر فلمیں دیکھنے کی عادت نہ بدلی۔

دو روز قبل جب والد گھر میں داخل ہوئے تو انہوں نے بیٹے کو موبائل استعمال کرتے ہوئے دیکھا جس پر وہ شدید غصہ ہوئے اور بیٹے پر شدید تشدد کیا، بات یہی ختم نہیں ہوئی بلکہ ظالم باپ نے ایک قدم آگے بڑھاتے ہوئے 18 سالہ نوجوان بیٹے کا چھری سے ہاتھ کاٹ دیا۔ حیدرآباد پولیس کے مطابق 45 سالہ قیوم قریشی نے رات کو سوتے وقت بیٹے کا ہاتھ کاٹا۔

پولیس کے مطابق قیوم قریشی کا بیٹا کیبل آپریٹر کا کام کرتا ہے اور اس نے حال ہی میں نیا اسمارٹ فون خریدا تھا، باپ کی جانب سے منع کرنے کے باوجود وہ مسلسل موبائل پر فلمیں دیکھتا رہتا تھا، بیٹے کی اس عادت کو لے کر باپ بیٹے کے درمیان دو دن سے گھر میں شدید جھگڑا چل رہا تھا۔

یہ پڑھیں: اسمارٹ فون نوجوانوں‌ اور بچوں‌ میں‌ بیماریاں‌ پھیلانے کا سبب، تحقیق

پولیس کا کہنا ہے کہ نوجوان کو فوری طور پر اسپتال منتقل کیا گیا اور اُسے طبی امداد فراہم کی گئی، ڈاکٹر کے مطابق مذکورہ نوجوان کی حالت خطرے سے باہر ہے تاہم اُس کا ہاتھ ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔

پولیس کے مطابق قیوم قریشی کی اہلیہ نے بیٹے کی حمایت میں اپنے شوہر کے خلاف تھانے پہنچ کر قتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کروایا جس کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ملزم نے دوران تفتیش اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ ’جس وقت میں گھر میں داخل ہوا تو یہ فلم دیکھ رہا تھا، شدید غصے میں خود پر قابو کرنے کی کوشش کی مگر میں ناکام رہا اور رات کو سوتے وقت موقع ملتے ہی بیٹے کا ہاتھ کاٹ دیا تاکہ وہ موبائل استعمال کرنے کے قابل ہی نہ رہے‘۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں