The news is by your side.

Advertisement

وائلڈ لائف افسر پر ہاتھی کا حملہ، ویڈیو وائرل

بنکاک: عالمی وبا کرونا کے باعث دنیا بھر میں سیاحت تقریبا ختم ہوگئی ہے، جس کے باعث جنگلی جانوروں کو مطلوبہ خوراک میسر نہیں ہوپارہی ہے اور انہوں نے انسانی آبادیوں پر حملے کرنا شروع کردئیے ہیں۔

ایسا ہی ایک واقعہ بنکاک کےصوبے نخون نایوک میں پیش آیا،جہاں خوراک کی تلاش کے لئے سرکردہ ہاتھیوں کے ریوڑ نے ایک گاؤں پر دھاوا بول دیا، اور تیار فصلوں کو نقصان پہنچانا شروع کردیا، اتنی بڑی تعداد میں ہاتھیوں کو دیکھ کر مقامی افراد نے محکمہ وائلڈ لائف سے رابطہ کیا اور انہیں صورت حال سے آگاہ کیا۔

صوبے نخون نایوک کے محکمہ وائلڈ لائف نے فوری طور پر اپنے دو افسران کو علاقے میں بھیجا، جنگلی حیات کے دو افسروں نے ہاتھیوں کے ریوڑ کو بھگانے کی کوشش کی ، ان میں سے ایک جمبو ہاتھی جسے ساریکا کے نام سے پکارا جاتا ہے، اسے شدید غصہ آیا اور وہ غصیلے انداز میں محکمہ وائلڈ کے افسران کے پیچھے دوڑ پڑا۔وائلڈ لائف افسران کا کہنا تھا کہ یہ بڑا خوفناک لمحہ تھا جب ایک بھوکے جنگلی ہاتھی نے غصے سے ہمارا پیچھا کیا ، ہمارا مقصد انہیں کسانوں کی فصل کھانے کی کوشش کرنے سے روکنا تھا۔

یہ بنکاک میں ایک ہفتے کے دوران جنگلی جانوروں کے انسانی آبادی پر حملے کا دوسرا واقعہ ہے، اس سے قبل تھائی لینڈ کے صوبہ نخون رتچاسیما میں بھوک سے ستائے بندروں نے مکئی کے کھیت پر دھاوا بولتے ہوئے اسے تہس نہس کرڈالا تھا۔

واضح رہے کہ کروبا وبا کے باعث سال دوہزار بیس کے پہلی اور دوسری سہہ ماہی میں کسی سیاح نے تھائی لینڈ کا رخ نہیں کیا، تازہ ترین دستیاب اعداد و شمار کے مطابق نومبر میں بیرون ملک سے صرف 3،065 سیاح تھائی لینڈ آئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں