The news is by your side.

Advertisement

آسٹریلیا: والدین سے ناراض بچے کا تنہا ہوائی سفر، جزیرہ بالی میں چار روز قیام

سڈنی: والدین سے ناراض ہوکر آسٹریلوی بچہ تنہا سفر کرکے جزیرہ بالی میں 4 روز تک مقیم رہا، والدین کے کریڈٹ کارڈ استعمال کرکے ہوٹل میں قیام کیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق آسٹریلوی بچے کا اپنی والدہ سے جھگڑا ہوگیا تھا جس کے بعد وہ سڈنی میں اپنے والدین کے گھر سے بھاگ گیا، پہلے وہ آسٹریلیا کے شہر پرتھ گیا اور پھر وہاں سے جیٹ اسٹار فضائی کمپنی کی ایک سستے سفر والی پرواز کے ذریعے جزیرہ بالی پہنچ گیا۔

بچے کا خاندان ماضی میں تعطیلات گزارنے جزیرہ بالی کا سفر کرچکا ہے جس کے بعد اس بچے نے کئی مرتبہ وہاں کے تنہا سفر کے لیے سیٹ بک کرانے کی کوشش کی تاہم فضائی کمپنیوں نے ایسا کرنے سے انکار کردیا۔

بچے نے اپنے سفر کے دوران والدین کا کریڈٹ کارڈ استعمال کیا اور اکاؤنٹ سے 8 ہزار آسٹریلوی ڈالر (5 ہزار یورو) خرچ کر ڈالے، بچے کے ایک دوست نے سوشل میڈیا پر ویڈیو کلپ دیکھ کر اس کی والدہ کو اطلاع دی کہ وہ بالی پہنچ چکا ہے، جس کے بعد والدین بچے کی تلاش کے لیے انڈونیشیا روانہ ہوگئے۔

آسٹریلیا قانون کے مطابق 5 برس سے کم عمر بچے تنہا سفر نہیں کرسکتے، تاہم 5 برس سے 11 برس کے درمیان کی عمر کے بچوں کے تنہا سفر کرنے کے لیے خصوصی ٹکٹس ہوتے ہیں۔ البتہ 12 سے 15 برس کے درمیان کے بچے تنہا سفر کرسکتے ہیں تاہم شرط یہ ہے کہ انہیں سرپرست کی اجازت حاصل ہو۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں