The news is by your side.

Advertisement

راولپنڈی میں ڈینگی سے مزید 2، مردان میں ایک مریض جاں بحق

راولپنڈی کے سرکاری اسپتالوں میں جگہ کم پڑ گئی، ڈینگی مریض نجی اسپتالوں میں داخل کرنے کا فیصلہ

راولپنڈی: ڈینگی وائرس کے مریضوں کی تعداد میں ہول ناک اضافہ ہو گیا ہے، گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران راولپنڈی میں مزید دو افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

تفصیلات کے مطابق ڈینگی سے متاثر ہولی فیملی اور ڈھوک کھبہ میں 2 افراد چل بسے ہیں، جس کے بعد صرف راولپنڈی میں ڈینگی سے مرنے والوں کی تعداد 12 ہو گئی ہے۔

مردان میں بھی ایک مریض ڈینگی وائرس سے جان سے ہاتھ دھو بیٹھا ہے، مریض کا تعلق نوشہرہ سے تھا اور وہ مردان میڈیکل کمپلیکس میں زیر علاج تھا۔

12 شہریوں کی ہلاکت کے بعد گزشتہ روز وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار بھی راولپنڈی پہنچ گئے، جہاں انھیں کمشنر اور ڈپٹی کمشنر نے انسداد ڈینگی اقدامات پر بریفنگ دی۔

دریں اثنا، پنجاب حکومت نے کمشنرز کو ڈینگی مہم تیز کرنے سے متعلق مراسلہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈپٹی کمشنرز موبائل بریگیڈز اینٹی ڈینگی اسکواڈ قائم کریں، ضلعی انتظامیہ عوام میں علاج، احتیاط اور تدبیر کی آگاہی مہم چلائے، جب کہ افرادی قوت اور ادویات کی کمی کو بھی پورا کیا جائے۔

تازہ ترین:  ڈینگی وائرس: 9 ماہ پر مشتمل ایک اور سرکاری رپورٹ تیار، کیسز کی تعداد 11 ہزار سے بڑھ گئی

ادھر ذرایع کا کہنا ہے کہ راولپنڈی میں ڈینگی وائرس بے قابو ہو چکا ہے، سرکاری اسپتالوں میں ڈینگی مریضوں کے لیے جگہ کم پڑ گئی ہے، پنجاب حکومت نے ڈینگی مریضوں کو نجی اسپتالوں میں داخل کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

ذرایع کے مطابق ڈینگی مریضوں کو نجی ٹیچنگ اسپتالوں میں منتقل کیا جائے گا، پنجاب حکومت نے نجی اسپتالوں کی نشان دہی کے لیے 3 رکنی کمیٹی بھی قایم کر دی ہے، جس کے سربراہ وائس چانسلر یونی ورسٹی آف ہیلتھ سائنسز ہوں گے، یہ کمیٹی نجی ٹیچنگ اسپتالوں میں عملے اور طبی سہولتوں کا جائزہ لے گی۔

منتخب نجی ٹیچنگ اسپتال میں 100 بیڈز ڈینگی مریضوں کے لیے مختص ہوں گے، مذکورہ کمیٹی آیندہ 24 گھنٹوں میں صوبائی حکومت کو رپورٹ جمع کرائے گی۔

علاوہ ازیں، معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر نے فیڈرل جنرل اسپتال چک شہزاد کا دورہ کر کے ڈینگی وارڈ میں مریضوں کی تیمارداری کی سہولیات کا جائزہ لیا، اور کہا کہ اسلام آباد کے اسپتالوں میں ہر 4 گھنٹے بعد مریض کو چیک کیا جاتا ہے، ڈینگی اور مریضوں کے معاملے پر سیاست سے گریز کیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں