The news is by your side.

Advertisement

کرائسٹ چرچ مسجد حملے کا ایک اور زخمی دم توڑ گیا، تعداد 51 ہو گئی

کرائسٹ چرچ: نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں مسجد حملے میں زخمی ہونے والا ایک اور شخص دم توڑ گیا، شہید ہونے والوں کی تعداد 51 ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں 15 مارچ کو دو مساجد پر ایک آسٹریلوی نے دہشت گرد حملہ کیا تھا جس میں 50 افراد شہید جب کہ 49 زخمی ہوئے تھے۔

آج کرائسٹ چرچ مسجد کے زخمیوں میں سے ایک اور زخمی نے دم توڑ دیا، سانحے کے سات ہفتوں بعد شہید ہونے والوں کی تعداد ایک بار پھر بڑھ کر 51 ہو گئی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق شہید ہونے والے شخص کا تعلق ترکی سے ہے، 46 سالہ ترک باشندہ مسجد حملے میں شدید زخمی ہو گیا تھا جسے کرائسٹ چرچ اسپتال میں طبی امداد دی جا رہی تھی۔

یہ بھی پڑھیں:  سانحہ کرائسٹ چرچ :پاکستانی ہیرو نعیم راشد کی بیوہ کو تمغہ شجاعت سے نوازاجائے گا

پولیس کا کہنا ہے کہ شہید ہونے والے شخص کا نام ان کی فیملی کی درخواست پر ظاہر نہیں کیا جا رہا ہے۔ وزیر اعظم نیوزی لینڈ نے بتایا کہ دہشت گرد حملے میں زخمی ہونے والے مزید 9 افراد کرائسٹ چرچ اسپتال میں داخل ہیں، جن کی حالت بہتر ہے۔

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا ایرڈرن نے زخمی کے انتقال پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں تہ دل سے شہید ہونے والے شخص کے خاندان سے تعزیت کرتی ہوں، یہ دکھ بھری خبر نہ صرف ترکی بلکہ نیوزی لینڈ میں بھی محسوس کی جائے گی۔

اس سانحے میں 9 پاکستانیوں نے بھی جام شہادت نوش کیا تھا، نعیم راشد اور ان کے بیٹے طلحہ راشد بھی شہدا میں شامل تھے۔

جمعے کی نماز کے موقع پر النور مسجد میں ہونے والے دہشت گرد حملے کے دور ان پاکستان کے نعیم راشد نے شدید زخمی ہونے کے بعد حملہ آور کو آگے جانے سے روک کر کئی جانیں بچائیں اور جام شہادت نوش کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں