The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کی ایک اور دھواں دار پریس کانفرنس

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں میڈیا کانفرنس کرتے ہوئے ایک بار پھر مخالف صدارتی امیدوار جوبائیڈن، سابق صدر اوباما، ڈبلیو ایچ او اور چین کے خلاف الزامات کے انبار لگا دیے۔

امریکی میڈیا کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے صدارتی امیدوار جوبائیڈن پر تنقید کے زبردست نشتر چلاتے ہوئے کہا کہ ان کے دور میں 10 ہزار فیکٹریاں بند ہوئیں، وہ 8 سال اوباما کے ساتھ اقتدار میں رہے، دونوں نے چین کو ہمارے راز چوری کرنے کی اجازت دی۔

ٹرمپ نے کہا کہ جوبائیڈن نے چین کی ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن میں شمولیت کی حمایت کی تھی، ڈبلیو ٹی او میں آ کر چین نے پوری دنیا کو لوٹا، کرونا وبا کے معاملے پر جوبائیڈن نے چین کا ساتھ دیا، جوبائیڈن نے کہا کہ چین کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

امریکی صدر کا کہنا تھا ہنٹر بائیڈن کئی ملین ڈالرز لے کر اڑا لیکن کوئی اس کے بارے میں بات نہیں کرتا، میں نے دنیا کی سب سے بڑی اور مضبوط معیشت تشکیل دی، کرونا کی وجہ سے دنیا کی سب سے بڑی معیشت کو بند کرنا پڑا تھا، اب ملکی معیشت کو دوبارہ سے تعمیر کر رہے ہیں۔

ٹرمپ نے یورپی یونین پر بھی تنقید کی، کہا یہ صرف امریکا پر برتری حاصل کرنے کے لیے تشکیل دی گئی تھی، میں نے سفری پابندیاں لگائیں تو نینسی پلوسی اور جوبائیڈن نے سفری پابندی کی مخالفت کی، لیکن تھوڑے عرصے بعد دونوں نے میرے فیصلے کو درست قرار دیا، سفری پابندیاں عائد کر کے لاکھوں جانوں کو محفوظ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر امریکا میں کیسز دنیا میں سب سے زیادہ ہیں تو اس کی وجہ یہ ہے کہ امریکا سب سے زیادہ ٹیسٹ کر رہا ہے۔

عالمی ادارہ صحت پر بھی ایک بار پھر تنقید کرتے ہوئے امریکی صدر نے کہا کہ یہ چین کی کٹھ پتلی بنا ہوا ہے، ہم عالمی ادارہ صحت کے ساتھ واپس آ سکتے ہیں اگر وہ اصلاح کر لیں۔ کرونا وائرس کو چینی وائرس کہتے ہوئے ٹرمپ نے کہا کہ اس سے نمٹنے کے لیے متعدد ویکسینز پر کام جاری ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں