The news is by your side.

Advertisement

اقوام متحدہ کی ایک اور رپورٹ میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب

مقبوضہ کشمیر میں انٹرنیٹ کی بندش سے معلومات کا حصول مشکل ہو گیا، عالمی یوم آزادئ صحافت پر یو این نمایندے کا بیان

نیویارک: اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی ایک اور رپورٹ میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق یو این انسانی حقوق نے آزادئ رائے کے فروغ و تحفظ سے متعلق ایک رپورٹ جاری کی ہے جس میں مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کا خصوصی ذکر شامل کیا گیا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں ابلاغی پابندیوں کے باعث بنیادی حقوق پامال ہو رہے ہیں، وادی کے عوام کو بھارت پابندیاں لگا کر سزا دے رہا ہے، بھارت نے کشمیری عوام کے لیے انٹرنیٹ تک رسائی بھی انتہائی محدود کر دی ہے۔

رپورٹ کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں پابندیوں کے باعث کرونا وبا کے دوران طبی عملے کے لیے اہم معلومات حاصل کرنا بھی مشکل ہو گیا ہے۔

ادھر عالمی یوم آزادئ صحافت پر اقوام متحدہ کے خصوصی نمایندے کا ویڈیو بیان بھی سامنے آیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انٹرنیٹ کی بندش سے معلومات کا حصول مشکل ہو گیا، کرونا وبا کے دوران معلومات کے لیے انٹرنیٹ کا حصول انتہائی ضروری تھا، اور طبی عملے کو صحت سے متعلق بین الاقوامی معلومات حاصل کرنی تھیں۔

رپورٹ پر رد عمل دیتے ہوئے یورپ میں چیئرمین کشمیر کونسل علی رضا سید نے کہا کہ یو این رپورٹ کا خیر مقدم کرتے ہیں، مقبوضہ وادی کے گھمبیر حالات پر اقوام متحدہ کی رپورٹ حقایق پر مبنی ہے، رپورٹ نے مقبوضہ کشمیر میں مواصلات کی بندش کو آزادئ اظہار رائے کے خلاف قرار دیا، اب بھارت کشمیریوں پر جاری ظلم و ستم چھپا نہیں سکتا۔

چیئرمین کشمیر کونسل نے مطالبہ کیا کہ عالمی برادری رپورٹ کے مطابق مقبوضہ وادی کی صورت حال کا نوٹس لے۔ انھوں نے کہا کہ ایل او سی پر بسنے والے باشندے بھی بھارتی فوج کے حملوں سے محفوظ نہیں، دنیا بھارت کو ایل او سی کی سویلین آبادی کے قتل عام سے بھی روکے۔

خیال رہے کہ آج دنیا بھر میں یوم آزادئ صحافت منایا جا رہا ہے، اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو کے تحت یوم آزادئ صحافت منانے کا مقصد کسی دباؤ کے بغیر آزاد اور ذمہ دارانہ اطلاعات عوام تک پہنچانا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں