The news is by your side.

Advertisement

جرمنی : کورونا ویکسین کے بجائے نمکین پانی، لیکن کیوں ؟

عالمی وباء کورونا وائرس کے سد باب کیلئے دنیا بھر میں ویکسی نیشن کا عمل جاری ہے، اس سلسلے میں کہیں ویکسین کی فراہمی میں مشکلات ہیں تو کہیں بے انتہا رش کے باعث عوام پریشانی کا شکار ہیں۔

اس حوالے سے شہریوں کو بہت احتیاط کی ضرورت ہے، ویکیسن لگواتے ہوئے اس بات کا خاص خیال رکھا جائے کہ کون سی ویکسین آپ کے لیے مختص کی گئی ہے اور اس کا کیا نام ہے؟

جرمنی میں ایک نرس نے کورونا ویکسین کے بدلے نمکین پانی کا انجکشن دے دیا جس کے بعد تقریباً 9000 افراد کو دوبارہ ویکسین کی خوراک دی گئی۔

جرمن میڈیا کے مطابق مقامی حکام نے کہا ہے کہ 5 مارچ سے 20 اپریل کے درمیان تقریباً نو ہزار افراد کو کوویڈ کے حفاظتی ٹیکے لگائے گئے تھے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تمام متاثرہ افراد کی عمریں70سال سے زائد ہیں اور انہیں شارٹینس روفاؤسن میں اسی مقام پر ویکسین دی گئی ہے۔

گزشتہ ماہ اپریل کے دوران ویکسینیشن سینٹر پر ایک نرس کے ہاتھوں ویکسین کی شیشی چھوٹ نیچے گرنے کی وجہ سے ٹوٹ گئی نرس نے ویکسین کی کمی کو پورا کرنے کے لئے خالی شیشی میں نمکین پانی کو انجکشن کے ذریعہ بھردیا جس کے بعد ویکسین لینے والوں کو ویکسین کے بجائے انجکشن کے ذریعہ نمکین پانی دیا گیا۔

متعلقہ پولیس آفیسر کے مطابق متعلقہ حکام جون کے مہینے میں متعدد گواہوں کے انٹرویوز لینے کے بعد اس نتیجے پر پہنچے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جن لوگوں نے ویکسین کے بدلے نمکین پانی دیا گیا ہوگا ان سے رابطہ کیا جائے گا تاکہ وہ اپنی خوراک کو پورا کرسکیں

Comments

یہ بھی پڑھیں