The news is by your side.

Advertisement

روسی کورونا ویکسین کے ٹرائلز کا آغاز

ماسکو : روسی انویسٹمنٹ فنڈ (آر ڈی آئی ایف) کی جانب سے کورونا وائرس کے خلاف روسی ویکسین کی پہلی کھیپ اسپتنک وی بیلاروس کو کلینکل ٹرائلز کیلئے پہنچادی گئی ہے۔

اس حوالے سے غیر ملکی خبر رساں ادارے نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ بیلا روس میں رضاکاروں پر ویکسی نیشن کے کلینکل ٹرائلز یکم اکتوبر سے شروع ہوں گے۔

آر ڈی آئی ایف بیلا روس میں ان کلینکل ٹرائلز کو سو افراد شراکت میں مالی اعانت فراہم کررہی ہے جنہیں روس کی وزارت صحت کے گامالیہ نیشنل ریسر انسٹئی ٹیوٹ آف آمیو لوجی اور مائیکرو بیالوجی کی جانب سے تیار کردہ ایک ویکسین کے ذریعے کورونا وائرس سے بچاؤ کا موقع ملے گا۔

اس حوالے سے آر ڈی ائی ایف نے بتایا ہے کہ بیلا روس روسی ساختہ اسپتنک ویکسین کے کلینکل ٹرائلز شروع کرنے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیا ہے، بیلا روس میں تحقیقی مراکز کے طور پر منتخب ہونے والے آٹھ طبی اداروں میں کلینکل ٹرائلز کیے جائیں گے۔

یاد رہے کہ گزشتہ 11 اگست کو روسی حکومت نے سرکاری طور پر دنیا کے پہلے کورونا وائرس ویکسین کی رجسٹریشن کی تھی جسے اسپوتنک وی کہا گیا۔

روس اب تک 20 سے زائد ممالک کے ساتھ ایک ارب سے زیادہ ویکسین کی خوراک دینے اور پانچ ملکوں کے ساتھ بڑے پیمانے پر بنانے کے لیے معاہدوں تک پہنچ چکا ہے۔

روسی صدر ولادیمیر پوتن نے روسی حکومت کو ہدایت دی کہ وہ 15 اکتوبر تک روس کے اسپوتنک وی کورونا وائرس ویکسین کے نظام الاوقات کو بیلاروس کو حتمی طور پر دے دے۔

مزید پڑھیں : کورونا ویکسین ، روس نے آئندہ سال تک بڑے منصوبے کی تیاری کرلی

واضح رہے کہ جیسے جیسے کورونا وائرس دنیا بھر میں پھیل رہا ہے تو روس اس وبا سے متاثر ہونے والا دوسرا بڑا ملک بن رہا ہے، امریکا کے بعد روس میں سب سے زیادہ افراد کورونا کا شکار ہو رہے ہیں۔

روس میں اب تک 3 لاکھ سے زائد کورونا کے مصدقہ کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں جب کہ مہلک وبا سے ہونے والی اموات کی تعداد 3ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں