The news is by your side.

Advertisement

اینٹی کرپشن کی سال 2020 کی پہلی بڑی کارروائی

کراچی : اینٹی کرپشن نے سال 2020 کی پہلی بڑی کارروائی کرتے ہوئے غیر قانونی ٹھیکوں کےاجرا پر ایکس سی این ظہیر عباس کو گرفتار کرلیا، گرفتار ایکس سی این پر خزانے کو 80 کروڑ کا نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔

تفصیلات کے مطابق اینٹی کرپشن ایسٹ نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے کےایم سی انجینئرنگ اور کےڈی اے آفس پر چھاپہ مارا اور غیر قانونی ٹھیکوں کےاجرا پر ایکس سی این ظہیر عباس کو گرفتار کرلیا۔

چھاپے کےدوران محکمے سے جاری کئے گئے ٹھیکوں کا ریکارڈ بھی ضبط کرلیا گیا، کارروائی بدعنوانی اور کروڑوں رشوت وصولی کے خلاف کی گئی ۔

کے ڈی اے کی جانب سے من پسند ٹھیکیداروں کو800 ملین کےٹھیکےدیئے گئے اور ٹھیکوں کے عوض 10 کروڑ روپے رشوت وصول کی گئی ، اینٹی کرپشن نے کے ڈی اے ،انجینئرنگ آفس کے ایم سی کا ریکارڈ سیز کردیا ہے۔

گریڈ 21 کے 2 سیکریٹریز اور سابق ڈی جی کے ڈی اےبدرجمیل میندھرو کو مقدمے میں نامزد کیا گیا ہے جبکہ سیکریٹری لوکل گورنمنٹ کانام بھی ایف آئی آر میں شامل ہیں۔

گرفتار ایکس سی این پر خزانے کو 80 کروڑ کا نقصان پہنچانے کا الزام ہے، ملزم نے غیرقانونی طور پر80کروڑ کے ٹھیکے نجی کمپنی کو جاری کئے ، ملزم کے ڈی اےا سکیموں میں ترقیاتی کاموں کے ورک آرڈرجاری کرتا تھا۔

ملزم کےجاری کئےگئےورک آرڈر اسکیموں کی سالانہ فہرست میں شامل نہیں تھی، وہ اسکیمیں جن کاذکر کے ڈی اے کی بجٹ بک میں بھی نہیں تھا اور غیرقانونی جاری ورک آرڈرپراس وقت کےڈی جی کےڈی اےکےدستخط تھے، ملزم کو تمام کاموں پرسیکریٹری لوکل گورنمنٹ کی سرپرستی حاصل تھی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں