The news is by your side.

Advertisement

بنگال میں مسلم مخالف قانون کا نفاذ میری لاش سے گزر کر ہوگا، ممتا بینرجی

کولکتہ: بھارتی ریاست بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بینرجی کا کہنا ہے کہ بنگال میں مسلم مخالف قانون کا نفاذ میری لاش سے گزرنے کے بعد ہی ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق کولکتہ میں وزیراعلیٰ ممتا بینرجی کی قیادت میں ہزاروں افراد شہریت سے متعلق متنازع قانون کے خلاف سڑکوں پر نکلے، مظاہرین نے مودی سرکار کے خلاف بینرز اور پلے لارڈز اٹھا رکھے تھے۔

ممتا بینرجی نے احتجاجی مارچ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب تک میں زندہ ہوں ریاست میں شہریت قانون اور این آر سی پر عملدرآمد نہیں ہونے دوں گی، چاہے میری حکومت ختم کر دی جائے، مجھے جیل میں ڈال دیا جائے لیکن اس کالے قانون پر کبھی عملدرآمد نہیں کروں گی۔

بھارتی ریاست بنگال کی وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ ہم اس قانون کے خاتمے تک جمہوری طریقے سے احتجاج جاری رکھیں گے، اگر وہ بنگال میں اس قانون پر عملدرآمد چاہتے ہیں تو انہیں یہ میری لاش پر سے گزر کر کرنا ہوگا۔

ممتا بینرجی کا مزید کہنا تھا کہ ہم تمام مذاہب کی بقا پر یقین رکھتے ہیں اور ریاست سے کسی کو بھی بے دخل نہیں کیا جائے گا۔

علی گڑھ یونیورسٹی میں بھی پولیس اور طلبا آمنے سامنے، طلبا کے خلاف لاٹھی چارج

یاد رہے کہ گزشتہ روز بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کی مرکزی جامعہ میں غیر مسلموں کو شہریت دینے کے نئے قانون کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر پولیس کی جانب سے آنسو گیس اور لاٹھی چارج کے استعمال سے 100 سے زائد طلبہ زخمی ہوگئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں