The news is by your side.

Advertisement

شادی کی خبریں زیر گردش: انوشکا شرما اہل خانہ کے ساتھ اٹلی روانہ

ممبئی: بالی ووڈ اداکارہ انوشکا شرما اور کرکٹر ویرات کوہلی کے مابین شادی کی خبریں زیر گردش ہیں اور اسی دوران وہ اپنے اہل خانہ کے ساتھ اٹلی روانہ ہوگئیں۔

بھارتی میڈیا پر تین روز قبل ویرات کوہلی اور انوشکا کی شادی کے حوالے سے خبریں زیر گردش تھیں کہ دونوں شخصیات نے رواں ماہ ازداواجی بندھن میں بندھنے کا فیصلہ کر لیا اور اُن کی شادی کی تقریبات رواں ماہ 9، 10 اور 11 دسمبر کو اٹلی میں منعقد کی جائیں گی۔

بعد ازاں انوشکا شرما کے ترجمان نے شادی کی خبروں کی تردید کردی تھی تاہم گزشتہ روز بالی ووڈ اداکارہ اور اُن کے اہل خانہ اٹلی روانہ ہوگئے جس کے بعد ایک بار پھرشادی کی خبریں گردش کرنے لگیں۔

میڈیا نمائندگان نے ائیرپورٹ پہنچنے پر شادی سے متعلق سوال کرنے کی کوشش کی تو وہ بغیر کوئی جواب دیے چلی گئیں بعد ازاں اُن کے والدین اور اہل خانہ میں سے بھی کسی نے اس متعلق کوئی جواب نہیں دیا، اس موقع اُن کے پاس زیادہ

قبل ازیں رواں سال اکتوبر میں بھارتی میڈیا نے دعویٰ کیا تھا کہ ویرات کوہلی نے بی سی سی آئی کو درخواست دی ہے کہ وہ رواں برس دسمبر میں سری لنکا کے خلاف ہونے والی سیریز میں نجی مصروفیات کی وجہ سے دستیاب نہیں ہوں گے۔

بھارتی کپتان کے ذرائع نے اس بات کا دعویٰ کیا تھا کہ ویرات کوہلی رواں برس دسمبر میں انوشکا شرما سے شادی کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور ممکنہ طور پر وہ رخصت بھی اسی وجہ سے لے رہے ہیں۔

گزشتہ دنوں بھارتی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے ویرات کوہلی نے اعتراف کیا تھا کہ اُن کے اور بالی ووڈ اداکارہ کے درمیان محبت کا رشتہ ہے اور وہ انہیں نوشکی کہہ کر مخاطب کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ویرات اور انوشکا کی شادی طے؟

یاد رہے کہ ویرات کوہلی اور انوشکا شرما کچھ دن قبل ایک کمرشل میں ایک ساتھ نظر آئے تھے جس میں انہوں نے عروسی ملبوسات زیب تن کیے ہوئے تھے، دونوں شخصیات کے مداحوں نے جوڑے کو بہترین قرار دیتے ہوئے جلد شادی کرنے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔

واضح رہے کہ بھارتی کپتان اور انوشکا شرما کے درمیان 2012 سے گہرے تعلقات ہیں، دونوں شخصیات کے بارے میں یہ تاثر عام ہے کہ یہ ایک دوسرے کی محبت میں گرفتار ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں