The news is by your side.

Advertisement

چیئرمین سینیٹ کا معاملہ کمیٹی کے سپرد کیوں کیا گیا، اے پی سی کی اندرونی کہانی

اسلام آباد : اپوزیشن کی اے پی سی میں اے این پی نے صادق سنجرانی کا متبادل بلوچستان سے لینے کی مخالفت کی جس پر معاملہ کمیٹی کے سپرد کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں ہونے والی اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) کی اندرونی کہانی سامنے آگئی، یہ وجوہات بھی عیاں ہوگئیں کہ چیئرمین سینیٹ کا معاملہ کمیٹی کے سپرد کیوں کیا گیا۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ اے این پی نے صادق سنجرانی کا متبادل بلوچستان سے لینے کی مخالفت کی تھی جبکہ نیشنل پارٹی نے چیئرمین سینیٹ بلوچستان سے لینے پر زور دیا، این پی نے چیئرمین سینیٹ کے معاملے پر اے پی سی میں تفصیلی بات کی۔

نیشنل پارٹی کا پر زور مطالبہ تھا کہ چیئرمین کا امیدوار ہماری پارٹی سے لیا جائے، چیئرمین سینیٹ کے لئےنیشنل پارٹی مضبوط امیدوارکے طور پر سامنےآگئی، ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ امیدوار پراختلاف رائے سامنےآنے پرمعاملہ کمیٹی کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اے این پی بلوچستان میں بی اے پی کی اتحادی اور سینیٹ میں مخالف ہے۔ اے پی سی میں جے یو آئی نے حکومت کے خلاف سیاسی جماعتوں کو میدان میں آنے کی تجویز دی،۔

حکومت کے خلاف سخت گیر مؤقف کی اے پی سی میں مخالفت کی گئی، اس تجویز پر پیپلز پارٹی کا مؤقف تھا کہ پارلیمان کو کمزور کیا گیا تو ملک میں تیسری قوت آجائے گی، ان ہاؤس تبدیلی کی تجویز پر مولانافضل الرحمان برہم ہوگئے، ان کا کہنا تھا کہ یہ خوف ہے تو پھرہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھےرہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں