The news is by your side.

Advertisement

حمزہ شہباز کی مشکلات میں اضافہ، وزیراعلیٰ کا انتخاب کالعدم قرار دینے کیلیے عدالت میں درخواست دائر

حمزہ شہباز کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا، وزیراعلیٰ پنجاب کا انتخاب کالعدم قرار دینے کیلیے لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق حمزہ شہباز کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے سپریم کورٹ کی جانب سے منحرف اراکین کا ووٹ شمار نہ کیے جانے کا فیصلہ دینے کے بعد ایک جانب ان پر عہدے سے ہٹنے کا دباؤ بڑھ گیا ہے اور اب وزیراعلیٰ پنجاب کا انتخاب کالعدم قرار دینے کیلیے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست بھی دائر کردی گئی ہے۔

پی ٹی آئی رہنما سبطین خان سمیت 5 اراکین کی جانب سے عامر سعید راں ایڈووکیٹ کی معرفت دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب کے انتخاب کے روز پی ٹی آئی اور ق لیگ کے اراکین اسمبلی کو حمزہ شہباز کی ایما پر اسمبلی سے نکال دیا گیا اور ہمارے اراکین اسمبلی کو جان بوجھ کر الیکشن کے عمل سے دور رکھا گیا۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ پولیس نے ہمارے ووٹرز کو حق راٸے دہی سے زبردستی روکا اور تشدد کیا۔ قانون کے مطابق اسمبلی سیشن میں پراٸیویٹ شخص کے آنے پر پابندی ہوتی ہے مگر پولیس داخل ہوئی، سیکرٹری اسمبلی نے پراٸیویٹ لوگوں کا داخلہ روکا مگر ڈپٹی سیکرٹری نے 300 لوگوں کو بلایا اور ہنگامہ آراٸی کرواٸی۔

درخواست میں یہ بھی نشاندہی کی گئی ہے کہ احمد سلیم بریار سمیت بعض اراکین نے ووٹ نہیں ڈالا مگر ان کا نام ووٹ ڈالنے والوں کی فہرست میں شامل ہے۔ درخواست گزار کے مطابق الیکشن آٸین اور قانون کے مطابق نہیں ہوا اس لیے حمزہ شہباز کا بطور وزیراعلیٰ پنجاب کا انتحاب غیرقانونی اور کالعدم قرار دیا جاٸے۔

واضح رہے کہ حمزہ شہباز کی حلف برداری کیخلاف لاہور ہائی کورٹ میں پہلے ہی ایک درخواست زیرسماعت ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں