The news is by your side.

Advertisement

پنجاب: ارکان قومی اسمبلی کو فی کس 20 کروڑ روپے جاری

اسلام آباد / لاہور: وفاقی اور پنجاب کی حکومت نے اراکین اسمبلی کے لیے خزانے کے منہ کھول دئیے، 20 کروڑ روپے فی رکن اسمبلی کو جاری کردیئے گئے۔مذکورہ رقم صرف نون لیگ کے اراکین کو جاری کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق یہ الیکشن کی تیاری ہے یا کچھ اورمعاملہ؟ مالِ مفت دل، بے رحم کے مصداق وفاق اور پنجاب کی صوبائی حکومت نے نواز لیگ کے ہررکن قومی اسمبلی کو ترقیاتی کاموں کے فنڈ کی مد میں 20 کروڑ روپے کی رقم جاری کی ہے جو ہر ممبر اپنے حلقہ انتخاب میں علاقے کی تعمیر و ترقی اور فلاح وبہبود کےلیے استعمال کرے گا۔

اطلاعات ہیں کہ اس حوالے سے ہر رکن قومی اسمبلی کو 10 کروڑروپے وفاقی حکومت کی جانب سے اور 10 کروڑ روپے پنجاب حکومت کی جانب سے دیئے گئے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ فنڈز جاری کرنے کا مقصد اراکین قومی اسمبلی اپنے حلقہ میں تر قیاتی کام کراسکیں گے، اس فنڈز کا مقصد ترقیاتی کاموں کی تکمیل کرنا ہے جس میں مکینوں کو بلدیاتی سہولتوں فراہم کرنا شامل ہیں ان میں سیوریج سسٹم کی بحالی، فراہمی آب کی لائنیں ڈلوانا، روڈ بنوانا، اسپتال، اسکول اور صحت کے مراکز کی بحالی ودیگر شامل ہیں۔

یاد رہے کہ مالی سال ختم ہونے میں پانچ ماہ باقی ہیں۔ قومی اسمبلی میں پنجاب سے ایم این ایز کی تعداد ایک سو پچاسی ہے۔ ان میں نون لیگ کے ارکان کی تعداد ایک سو تہتر ہے۔

ایک سو تہتر کو اگر بیس کروڑ سے ضرب دیا جائے تو جواب چونتیس ارب ساٹھ کروڑ روپے آتا ہے۔ جو لیگی ارکان کو مل گئے ہیں۔

سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ این ایف سی ایوارڈ کے تحت صوبوں کو حصہ دینے میں اگر مگر کا چکر اور ٹال مٹول سے کام لینا اور سالانہ ترقیاتی بجٹ میں بھی بڑی کٹوتی کی گئی کیا یہ سب کچھ اپنوں میں بندر بانٹ کیلئے تو نہیں تھا؟

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں