The news is by your side.

Advertisement

وراثت کا حق، ماں اور بچے کی صحت کا معاملہ، صدر مملکت نے علماء‌ کرام سے اہم درخواست

کراچی: صدر مملکت عارف علوی نے علماء کرام سے درخواست کی ہے کہ ماں اور بچے کی صحت کے حوالے سے عوام میں آگاہی پیدا کریں۔

سرکاری ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق صدرِ مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے گورنر ہاؤس میں مفتی منیب الرحمان کی زیر قیادت علماء کے وفد سے ملاقات کی ۔

صدر مملکت نے علماء کرام سے درخواست کی کہ وہ ماں اور بچے کی صحت کے حوالے سے عوام میں آگاہی پیدا کرنے میں اپنا کردار ادا کریں اور وراثت میں خواتین کے حقوق پر بھی عوام کو بیدار کریں۔

علماء  کرام نے کرونا ایس او پیز کے ساتھ مسجد کھولنے کی اجازت دینے پر صدر مملکت کی تعریف کی اور بین المذاہب ہم آہنگی، تمام مکتبہ فکر کو اعتماد میں لینے پر بھی اُن کے کردار کو سراہا۔

یاد رہے کہ صدر پاکستان نے گزشتہ برس خواتین کے حقِ وراثت کے تعین کے لیے آرڈیننس منظور کیا تھا جس کو 6 دسمبر سے نافذ کیا گیا ہے، اس قانون کے تحت ملکی تاریخ میں پہلی بار حقِ وراثت کا تعین کیا گیا۔

علاوہ ازیں حال ہی میں وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے سماجی بہبود و غربت مٹاؤ مہم ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے اعلان کیا تھا کہ حکومت جلد ہی احساس نشوومنا پروگرام کا آغاز کرنے جارہی ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر جاری اپنے بیان میں ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ  اسٹنٹنگ کی روک تھام پرمبنی احساس نشوونما پروگرام جلدشروع کیاجارہاہے، پروگرام کے تحت خیبر کے نشوونما مرکز کی تیاریاں آخری مراحل میں ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ احساس نشوونما پروگرام میں صارف خواتین کو نقد اور ماہانہ ظائف دیےجائیں گے، تمام نشوونما مراکز پر اے ٹی ایم خاص طور پر نصب کیےجارہےہیں، یہ اقدام صارف خواتین کی بائیومیٹرک تصدیق سےآسان ادائیگی کےلیے کیا جارہا ہے۔ ثانیہ نشتر نے یہ بھی بتایا تھا کہ ’خواتین اور  کمزور بچوں کو صحت بخش اضافی غذا کے پیکٹ فراہم کیے جائیں گے، نشوونما مراکز پر پیکٹوں کی ترسیل و تقسیم کا ریکارڈ رکھا جائے گا، خواتین ،،بچوں کی خوراک اور صحت و صفائی پر چارٹ اور پوسٹر بنائےگئے ہیں‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں