The news is by your side.

Advertisement

جائیداد کی نئی سرکاری قیمتوں سےمتعلق واضح ہدایات جاری نہ ہوسکیں

اسلام آباد : جائیداد کی نئی سرکاری قیمتوں سے متعلق واضح ہدایات جاری نہ ہوسکیں، ملک بھر میں پراپرٹی کا کاروبار ٹھپ ہوگیا ہے اور اربوں روپے کا سرمایہ پھنس گیا۔

تعمیراتی شعبے کی نمائندہ تنظیم آباد کے قائم مقام چیئرمین عارف یوسف جیوا کے مطابق حکومت کی جانب سے جائیداد کی ویلیو ایشن کے نوٹیفیکیشن پرعمل درآمد نہ ہونے سے قومی خزانے اُور پراپرٹی بزنس سے وابستہ افراد کو کروڑوں روپے کا نقصان ہوچکا ہے، جس کے ازالے کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں۔

عارف جیوا نے کہا کہ حکومت کی جانب سےواضح ہدایات جاری نہ ہونے سے جائیداد کی منتقلی اور سیل ڈیڈ کے اُمور ٹھپ ہوکر رہ گئے ہیں، جائیداد کی کاغذی کاروائیاں صرف بیس فیصد رہ گئی ہیں۔

ملک بھرمیں مجاز افسران اُمور نمٹانے کے بجائے اُنہیں ملتوی کررہے ہیں۔

عارف یوسف جیوا نے وفاق سے مطالبہ کیا کہ جائیداد کی ویلیوایشن اور دیگر امور سے متعلق مسائل پر مجاز افسران کو واضح معلومات اور آگاہی کے لیے فوری اقدامات کرے۔


مزید پڑھیں : پراپرٹی کی اضافہ شدہ قیمت میں ہر سال 10فیصد اضافہ کرنے پر اتفاق


یاد رہے کہ جولائی میں پاکستان بھر میں پراپرٹی کے یکساں اور مارکیٹ قیمت کے مطابق قیمتیں مقرر کرنے کےلیے وفاقی حکومت کی جانب سے اقدامات کا فیصلہ کیا گیا تھا جب کہ پراپرٹی کی قیمتوں کے تعین کے لیے اسٹیٹ بینک کے افسران کی تعیناتی کے فیصلے سے بھی حکومت دستبردار ہو گئی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں