The news is by your side.

Advertisement

پاک فوج دہشت گردی کو ملک سے اکھاڑنے کے لئے پرعز م ہے، جنرل قمر باجوہ

کاکول : پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہپاک فوج اور قوم دہشت گردی کو ملک سے اکھاڑپھینکنے کے لئے پر عز م ہے ،ہم نے ملک سے دہشت گردوں کی پناہ گاہوں کا خاتمہ کردیا ہے،  افغانستان میں دیرپا امن کیلئے افغان ثالثی عمل کے حامی ہیں۔

ان خیالات کااظہار انہوں نے پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں پاسنگ آؤٹ پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے کیا، پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں پاسنگ آؤٹ پریڈ کا انعقاد کیا گیا۔

سعودی عرب کے کیڈٹس بھی پاس آؤٹ ہونے والوں میں شامل تھے، تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے پاس آؤٹ ہونے والے کیڈٹس کومبارکباد پیش کی۔

انہوں نے کہا کہ پاس آؤٹ کیڈٹس اپنی پیشہ ورانہ ذمہ داریوں پربھرپور توجہ دیں، پیشہ ورانہ تربیت مکمل کرنے کے بعد اب آپ پر اہم ذمہ داریاں ہیں، اپنی صلاحیتوں کا بھرپور انداز میں مظاہرہ کریں۔

آرمی چیف نے کہا کہ ہمارے دشمن جانتےہیں وہ روایتی جنگ میں ہمیں شکست نہیں دے سکتے۔ افغانستان میں دیرپا امن و استحکام کیلئے افغان ثالثی عمل کے حامی ہیں، آئندہ نسلوں کیلئے پرامن اور مستحکم پاکستان دینا چاہتے ہیں۔

پاکستان نے دہشت گردی انتہا پسندی کو مسترد کر دیا، قوم اور مسلح افواج دہشت گردی کے خاتمے کےلئے متحد ہیں، پاکستان سے تمام دہشت گرد جماعتوں کا ڈھانچہ ختم کر دیا۔

آرمی چیف نےمزید کہا کہ دورحاضر میں جدید جنگی رجحانات تیزی سے بڑھ رہےہیں، ردالفساد کے ذریعے حاصل کامیابیوں کو مزید تقویت دی جارہی ہے، آپریشن ردالفساد محض ایک آپریشن نہیں بلکہ نظریہ ہے، ہم اپنی سرزمین سے شدت پسندی جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے پرعزم ہیں اور اپنی دھرتی کسی دوسرے ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دینگے۔

جنرل باجوہ نے کہا کہ کے پی بالخصوص فاٹا کے عوام کی قربانیوں کے بغیر امن ممکن نہیں تھا، افغانستان میں دیرپا امن کیلئےافغان ثالثی عمل کے حامی ہیں، افغانستان میں امن کے بغیر پاکستان میں امن ممکن نہیں، فریقین کو خطے میں امن کا موقع دینا ہوگا۔

مسئلہ کشمیر کے حوالے سے آرمی چیف کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کےعوام کو اپنےمستقبل کا فیصلہ کرنے کا مکمل حق حاصل ہے، کشمیری بھائیوں کی بھرپور سیاسی اوراخلاقی حمایت جاری رکھیں گے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر سمیت تمام تنازعات پرامن مذاکرات سے حل کرنے پریقین رکھتے ہیں، کیونکہ کشمیرسمیت پاک بھارت تنازعات کا حل مذاکرات کے ذریعے ہی ممکن ہے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں