The news is by your side.

Advertisement

آرمی چیف جنرل باجوہ سے برطانوی چیف آف جنرل اسٹاف کی ملاقات

راولپنڈی : پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے برطانوی چیف آف جنرل اسٹاف جنرل نکولس پیٹرک نے ملاقات کی ہے، انہوں نے دہشت گردی کیخلاف پاکستانی کوششوں کے مثبت نتائج کو سراہا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ  آئی ایس پی آر کے مطابق برطانوی چیف آف جنرل اسٹاف جنرل نکولس پیٹرک جو دو روزہ دورے پرپاکستان آئے ہیں انہوں نے جی ایچ کیو میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے خصوصی ملاقات کی۔

اس موقع پر دوطرفہ امور سمیت علاقائی سلامتی کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا، گفتگو کرتے ہوئے جنرل قمر جاوید باجوہ نے خطےمیں قیام امن کے لئے مشترکہ لائحہ عمل کی ضرورت پر زور دیا۔

ISPRGeneral Sir Nicholas Patrick Carter, Chief of General Staff (CGS) UK Army, arrived on two days official visit to Pakistan.Met Chief of Army Staff (COAS) General Qamar Javed Bajwa. Bilateral issues and regional security situation was discussed. UK CGS acknowledged positive results of Pakistan’s efforts against terrorism and recent measures taken along Pak-Afghan Border including the fencing for improvement in border control. The visiting dignitary also hailed Paigham e Pakistan FATWA which shall have far reaching effects against extremist narrative. COAS highlighted the need for collective action within a collaborative framework to help encourage peace and stability in the region. The visiting General along with COAS visited Girdi Jungle, Balochistan today which has recently been sanitised. The delegation was given detailed briefing on security situation and security operations in support of Khushal Balochistan program. The visitors were highly appreciative of the professionalism and dedication with which the sanitization operation had been conducted. Girdi Jungle, a small village before 1979, had swelled to a town of around 60,000 inhabitants with the majority being Afghan refugees. Over the years it had been converted into a hub of criminal and narco activities, facilitating both smugglers and terrorists in their nefarious agenda. The area is now free from inimical influence. The visitors also flew over the border town of Brabchah and were briefed on the peculiar environment of the area and steps taken to secure Pak Afghan border in Balochistan. The dignified and ordered resettlement of Afghan refugees and measures to spread dividends of peace in larger region also came under discussion during the visit.British High Commissioner, British Defence attaché in Pakistan and Commander Southern Command were also present during the visit.

Posted by Maj Gen Asif Ghafoor on Friday, 6 April 2018

آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل نکولس پیٹرک کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی کوششیں اور پاک افغان بارڈر پر اقدامات قابل قدر ہیں، معزز مہمان نے دہشت گردی کیخلاف پاکستانی کوششوں کے مثبت نتائج کو بھی سراہا۔

جنرل سرنکولس پیٹرک نے پیغام پاکستان فتویٰ کی بھی تعریف کی، بعد ازاں جنرل سرنکولس پیٹرک نے آرمی چیف کے ہمراہ بلوچستان کےعلاقے گردی جنگل کا بھی دورہ کیا،۔

برطانوی ہائی کمشنر، دفاعی اتاشی ،کمانڈر جنوبی کمانڈ بھی جنرل نکولس پیٹرک کے ہمراہ تھے۔ گردی جنگل کا علاقہ جہاں آج کل زیادہ تر افغان پناہ گزین رہائش پذیرہیں، یہ علاقہ آپریشن ضرب عضب سے پہلے دہشت گردوں اور اسمگلروں کی آماجگاہ بنا ہوا تھا۔

تاہم پاک فوج کی کامیاب کارروائیوں کے باعث یہ علاقہ اب دہشت گردوں اور منشیات فروشوں سے پاک ہوچکا ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق برطانوی وفد کو صوبہ بلوچستان میں سیکیورٹی صورتحال، آپریشنز پرتفصیلی بریفنگ بھی دی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں