مالی امداد نہیں چاہتے البتہ قربانیوں اورکاوشوں کا اعتراف کیا جانا چاہیے، آرمی چیف ispr
The news is by your side.

Advertisement

مالی امداد نہیں چاہتے، ہماری قربانیوں اورکاوشوں کا اعتراف کیا جانا چاہیے، آرمی چیف

راولپنڈی : آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان کے پُرامن افغانستان میں کسی بھی ملک سے زیادہ مفادات ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ عالمی برادری امداد دینے کے بجائے ہماری قربانیوں اور نقطعہ نظر کو سمجھے۔

ترجمان آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بتایا ہے کہ امریکی سینٹرل کمانڈ کے کمانڈر اپنے وفد کے ہمراہ دورہ پاکستان پرپہنچے ہیں اور آج آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی۔

ملاقات کے دوران دو طرفہ تعلقات، پیشہ ورانہ دلچسپی کے امور اور افغانستان کی تازہ ترین سیکیورٹی صورت حال پر تبادلہ کیا گیا تاہم مجموعی طور پر افغانستان کی سیکیورٹی صورت حال ملاقات کا محور تھی۔

اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردوں کے خلاف بلاتفریق کارروائی کی ہے اور خطے میں امن و استحکام کے لیے پاکستان کی طویل کوششوں اور قربانیوں کا اعتراف ہونا چاہتے۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے نزدیک مالی اور مادی تعاون سے زیادہ اہمیت اس بات کی ہے کہ پاکستان کی کاوشوں اور قربانیوں کا اعتراف کیا جائے کیوں کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے عوام اور فوج نے بے مثل قربانی دی ہیں۔

آرمی چیف قمر باجوہ نے کہا کہ پاکستان کے لیے امریکا سے تعلقات اہم ہیں اور خطے میں استحکام کے لیے امریکا کے ساتھ فوجی تعاون ضروری ہے جس کا مقصد پاک افغان سرحد پر امن و استحکام ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں