پاکستان میں پینے کا پانی زہریلا ہوگیا، عالمی ادارہ صحت کی تہلکہ خیز رپورٹ -
The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں پینے کا پانی زہریلا ہوگیا، عالمی ادارہ صحت کی تہلکہ خیز رپورٹ

نیو یارک : عالمی ادارہ صحت نے متنبہہ کیا ہے کہ پاکستان میں زیرزمین پانی میں سنکھیا کی مقدار خوفناک حد تک بڑھ گئی ہے۔

کیا پاکستان کے بیشتر افراد پانی نہیں زہرکےگھونٹ پی رہےہیں؟عالمی ادارہ صحت کی تہلکہ خیز رپورٹ نے خطرے کی گھنٹی بجادی تحقیقاتی رپورٹ میں سنسنی خیز انکشاف کیا گیا ہے کہ زیر زمین پانی میں زہریلے کیمیکل سنکھیا کی مقدارخوفناک حد تک بڑھ گئی ہے۔

عالمی معیار کے مطابق ایک لیٹر پانی میں سنکھیا کی زیادہ سے زیادہ مقدار دس مائیکرو گرام ہونی چاہیے، مگر پاکستان میں سنکھیا کی مقدار اکیاون سے دوسو مائیکرو گرام ہے۔

عالمی تحقیق میں مختلف علاقوں سے پانی کے بارہ سو ذخائر چیک کئے گئے، جن میں مقرر کردہ مقدار سے زیادہ سنکھیا پایا گیا،  پاکستان کی 60 سے 70 فیصد آبادی کا زیر زمین پانی پر انحصار ہے۔

تحقیق کے مطابق کشمیر سے لے کر حیدرآباد تک دریائے سندھ کے آس پاس کے میدانی علاقوں میں رہائش پذیر چھ کروڑ افراد آرسینک ملاپانی پی رہے ہیں، جو خاموش زہر ہے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ کاشت کاری کے لیے پانی کے استعمال نے صورتحال کو مزید خراب کر دیا ہے، آرسینک ملاپانی مسلسل استعمال کرنے سے جلد کی بیماریاں، پیپھڑوں کا کینسراور دل کے امراض لاحق ہوسکتے ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں