The news is by your side.

ارشد شریف قتل معاملہ، رانا ثنا ایسا کیا جانتے ہیں جو کوئی دوسرا نہیں جانتا؟

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ کا بار بار یہ اصرار کہ ارشد شریف کی زندگی کو کوئی خطرہ نہیں تھا سے سوال اٹھ گیا ہے کہ وہ ایسا کیا جانتے ہیں جو کوئی دوسرانہیں جانتا؟

اے آر وائی نیوز کے مطابق پاکستان کے سینیئر صحافی اور ہر دلعزیز اینکر ارشد شریف شہید کے کینیا میں قتل کے بعد وفاقی وزیرداخلہ بار بار یہ دعویٰ کر رہے ہیں کہ ارشد شریف کو پاکستان میں کوئی خطرہ نہیں تھا۔ ان کی پریس کانفرنسیں، بیانات اور تقریریں اسی نکتے پر مرکوز ہیں کہ ارشد شریف یہاں محفوظ تھے۔

رانا ثنا اللہ کے بیانات کے برعکس ارشد شریف اپنی زندگی میں ہی خود کو لاحق خطرات کا ذکر کرچکے تھے۔ اس حوالے سے انہوں نے صدر مملکت کو بتایا تھا۔ سپریم کورٹ میں درخواست دی تھی۔ اس کے ساتھ ساتھ وہ اپنے وی لاگز میں بار بار ان خدشات کا اظہار بھی کرتے رہے۔

ارشد شریف نے اپنی زندگی قربان کر دی لیکن رانا ثنا کو پھربھی یقین نہ آیا کہ وہ خطرے میں تھے۔

جس سے یہ سوال اٹھ رہا ہے کہ آخر وفاقی وزیر داخلہ کو اس کا اتنا پختہ یقین کیوں ہے؟ کیا ان کی ارشد سے کوئی بات ہوئی تھی؟ کیا انہوں نے شہید صحافی کو کوئی سیکورٹی فراہم کی تھی؟

ن لیگ حکومت اور وزیر داخلہ تو وہ ہیں جنہوں نے ارشد شریف پر ملک بھر میں مقدمے کرائے۔ انہیں ہراساں کیا۔ دفتر پر دھاوا بھی بولا۔ ارشد انہی خدشات کی وجہ سے ملک چھوڑ گئے اور بالآخر اپنی جان سے گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں