The news is by your side.

Advertisement

بجٹ 17-2016: اہم تجاویز اے آر وائی نیوز کو موصول

اسلام آباد: قومی بجٹ سال 17-2016 وفاقی کابینہ سے منظور ہوگیا۔ بجٹ کی بعض اہم تجاویز اے آر وائی نیوز نے حاصل کرلیں۔

آئندہ مالی سال 17-2016 کا قومی بجٹ آن لائن منظور ہوگیا۔ وزیر اعظم نواز شریف نے لندن سے ویڈیو لنک کے ذریعے وفاقی کابینہ کے بجٹ اجلاس کی صدارت کی جس میں بجٹ تجاویز کا جائزہ لے کر ان کی منظوری دی گئی۔

وزیر اعظم نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو کاشت کاروں کے لیے یوریا کی قیمت کم کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا کہ توانائی منصوبوں کے لیے مناسب منصوبہ بندی کی ہے۔ مالی خسارہ 4.3 فیصد تک کم ہوگیا ہے۔

ذرائع کے مطابق آئندہ مالی سال کے بجٹ میں چینی پر 8 فیصد ایکسائز ڈیوٹی عائد کرنے کی تجویز ہے۔
چینی پر سیلز ٹیکس کو کم کر کے 8 فیصد کرنے کی تجویز ہے۔
سیمنٹ پر عائد 5 فیصد ایکسائز ڈیوٹی ہٹانے کی تجویز ہے اس کی جگہ سیمنٹ پر ایک روپے فی کلو ٹیکس لگانے کی تجویزہے۔
زرعی ادویات پر ایکسائز ڈیوٹی کم کر کے7 فیصد کرنے کی تجویز ہے۔
ادویات کے خام مال کی درآمد پر عائد سیلز ٹیکس ختم کرنے کی تجویز ہے۔
لیپ ٹاپ اور کمپیوٹرز پر عائد سیلز ٹیکس ختم کرنے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔
کاٹیج انڈسٹری کو سیلز ٹیکس سے مستثنیٰ کرنے کی تجویز ہے۔
گوادر پورٹ کو سیلز ٹیکس اور ایکسائز ڈیوٹی سےمستثنیٰ کرنے کی تجویز بھی بجٹ میں شامل ہے اور گوادر پورٹ پر چینی جہازوں کے لیے خصوصی رعایت بھی تجویز کی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق آئندہ بجٹ میں 160 ارب روپے کے نئے ٹیکس لگنے کا امکان ہے جن کا نفاذ سگریٹ، منرل واٹر، ڈیری مصنوعات سمیت خواتین کی کاسمیٹکس اور میک اپ کے دیگر لوازمات پر ہوسکتا ہے۔ آئندہ بجٹ میں 100 ارب روپے کے رعایتی ایس آر اوز واپس لیے جائیں گے جس سے مہنگائی مزید بڑھنے کا امکان ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں