The news is by your side.

Advertisement

اے آر وائی نیوز پولیس اہلکار کی آواز بن گیا

ڈپٹی انسپکٹر جنرل جیل سکھر نے اے آر وائی نیوز کی خبر پر ایکشن لیتے ہوئے محکمہ جیل کے پولیس اہلکار کی چھٹی منظور کرتے ہوئے ہیڈ محرر کے خلاف کارروائی کی یقین دہانی کروا دی۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے شہر گھوٹکی میں محکمہ جیل کے پولیس اہلکار نے افسران کی مبینہ ناانصافی کے خلاف چیخ و پکار کی اور جیل کے گیٹ پر بچوں کو فروخت کرنے کے لیے آوازیں لگا رہا تھا۔

پولیس اہلکار کے احتجاجاً بچے فروخت کرنے کی ویڈیو اے آر وائی نیوز پر نشر ہوتے ہی ڈی آئی جی جیل خاجات راجہ ممتاز نے اہلکار کے احتجاج کا نوٹس لیا اور اہلکار بچے کے علاج کےلیے مالی معاونت اور ہیڈمحرر کے خلاف کارروائی کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

ڈی آئی جی جیل سکھر کا کہنا تھا کہ محکمہ جیل کے پولیس اہلکار کو چھٹی دے دی گئی ہے اور جیل سپریٹنڈنٹ سے واقعے کی رپورٹ بھی طلب کی ہے۔

واضح رہے کہ بچے کے علاج کےلیے چھٹی نہ ملنے اور رشوت طلبی کے خلاف پولیسو اہلکار نے احتجاج ریکارڈ کرایا تھا۔

پولیس اہلکار بچے فروخت کرنے جیل کے گیٹ پر پہنچ گیا

پولیس اہلکار نثار لاشاری کا کہنا تھا کہ جیل کے افسران کی زیادتیوں نے بچے فروخت کرنے پر مجبور کردیا۔

پولیس اہلکار کا کہنا تھا کہ 17 نومبر کو بچے کا گمبٹ کے اسپتال میں آپریشن ہے، چھٹی کے لیے ہیڈ محرر کی جانب سے 20 ہزار روپے رشوت مانگی گئی، ہیڈ محرر عزیز نے رشوت نہ دینے پر لاڑکانہ جیل تبادلہ کرادیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں