The news is by your side.

Advertisement

سری لنکا دہشت گردی، صدر نے پولیس سربراہ کو معطل کردیا

کولمبو: سری لنکا میں ایسٹر کے موقع پر خود کش دھماکوں کے بعد ملکی صدر میتھری پالا سری سینا نے پولیس چیف پوجیتھ جیا کو معطل کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سری لنکن پولیس سربراہ کو ازخود عہدہ نہ چھوڑنے پر معطل کیا گیا، صدر میتھری اتنے بڑے سانحے کے بعد غلفت برتنے پر اداروں کے خلاف سخت کارروائی کررہے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سری لنکا کے صدر نے ایسٹر پر بم حملوں کو روکنے میں ناکامی اور فرائض سے غفلت برتنے پر سکیورٹی اداروں میں بھی اکھاڑ پچھاڑ کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے، پولیس چیف کو معطل کرنے کے بعد نائب پولیس چندنا وکرما رتنے کو قائم مقام پولیس سربراہ مقرر کیا گیا ہے۔

اس دہشت گرد حملے سے قبل سری لنکن سیکیورٹی اداروں کو انٹیلی جنس اطلاعات موصول ہوچکی تھیں تاہم اس کے باوجود پولیس نے حملے کی روم تھام کے لیے کوئی حکمت عملی تیار نہیں کی۔

سری لنکن صدر نے ان بم دھماکوں کے بعد پولیس سربراہ کو اپنا عہدہ چھوڑنے کا حکم دیا لیکن انہوں نے حکم ماننے سے ا نکار کردیا تھا، بعد ازاں انہیں جبری معطل کیا گیا۔

ہنگامی قانون کے تحت سری لنکا میں نقاب پر پابندی عائد کردی گئی

واضح رہے کہ سری لنکا کے گرجا گھروں اور ہوٹلوں میں ہونے والے 8 خودکش دھماکوں کی ذمہ داری شدت پسند تنظیم داعش نے قبول کی تھی۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال ستمبر میں سوئٹزرلینڈ میں عوام کی بڑی تعداد نے خواتین کے برقع پہننے پر پابندی کے حق میں رائے دی جس کے بعد برقع پہننے پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں