site
stats
عالمی خبریں

شام کیمیائی حملہ، بشار الاسد نے ملوث ہونے کی تردید کردی

دمشق: شام کے صدر بشار الاسد نے کیمیائی حملے کے الزام کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ میری فوج پر کیمیائی حملہ کرنے کی اطلاعات سو فیصد جھوٹ ہیں۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شامی صدر  نے کہا کہ ’’ہم نے 2013 میں کیمائی ہتھیار عالمی انسپکٹرز کے حوالے کردیے تھے اور اُس کے بعد سے ہمارے پاس کوئی کیمیائی ہتھیار نہیں‘‘۔

انہوں نے کہا کہ اگر اول بات تو یہ ہے کہ میں نے کسی حملے کا حکم نہیں دیا تاہم حکومت کے پاس  اگرکیمیائی ہتھیار موجود ہوتے بھی تو ہم انہیں استعمال کرنے کے قائل نہیں۔  بشار الاسد نے مزید کہا کہ معاملے کی غیر جانبدارانہ تحقیق کی اجازت دیں گے۔

یاد رہے گزشتہ ہفتے شام کے شہر ادلب میں کیمیائی حملہ کیا گیا تھا جس کے نتیجے میں 72 شامی شہری اور بچے جاں بحق ہوئے تھے، اقوام متحدہ نے اس حملے پر تشیویش کا اظہار بھی کیا تھا۔

بعد ازاں ٹرمپ انتظامیہ نے اس حملے کو انسانیت پر حملہ قرار دیتے ہوئے فضائی حملے کیے تھے جس کے جواب میں روس نے امریکا کو متنبہ بھی کیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top