The news is by your side.

Advertisement

” ہم نےغلام رہنا ہے یا آزاد؟، فیصلہ عوام نے کرنا ہے "

اسلام آباد: سابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا ہے کہ یہ پاکستان ہمار اہے، تمام ادارے ہمارے ہیں، فیصلہ عوام نےکرنا ہےکہ کیا ہم نےغلام رہنا ہےیا آزاد ؟

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں قبل از گرفتاری کیس کی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں اسد قیصر نے کہا کہ ہمارے خلاف مقدمات بدنیتی کی بنیاد پر درج کیےگئے،
ہم قانون کی بالا دستی پریقین رکھتے ہیں، ہمارا مطالبہ ہےکہ فوری الیکشن کرائےجائیں۔

اسد قیصر نے دعویٰ کیا کہ امپورٹڈحکومت کو باہر سے ہدایات ملتی ہیں، یہ قائداعظم کا پاکستان اپنے فیصلےخود کرےگا،کسی سےتجاویز نہیں لیں گے، یہ پاکستان ہماراہے، تمام ادارے ہمارے ہیں، ہم پاکستان کےآئین پریقین رکھتےہیں۔

یہ بھی پڑھیں: عمران خان آج شانگلہ بشام میں جلسہ عام سے خطاب کریں گے

سابق اسپیکر قومی اسمبلی نے مطالبہ کیا کہ فوری الیکشن کرائےجائیں، فیصلہ عوام نےکرنا ہےکہ کیا ہم نےغلام رہنا ہےیا آزاد؟ انصاف نہ ملا تو ہم عدالت اور عوام میں جائیں گے اور پُر امید ہیں کہ قانونی اورعوامی جنگ بھی جیتیں گے۔

اس سے قبل اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو آئندہ سماعت تک گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا تھا اسد قیصرنے گرفتاری سے بچنے کے لیےاسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی تھی۔

سابق اسپیکر قومی اسمبلی کے وکیل نے عدالت میں استدعا کی کہ میرے موکل کے خلاف ملک بھر میں درج مقدمات کی فہرست فراہم کی جائے اور مقدمات کی فہرست ملنے تک اسد قیصر کی گرفتاری سے روکا جائے، عدالت نے اسد قیصر کے وکیل کی استدعا منظور کرتے ہوئے آئندہ سماعت تک انہیں گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا اور کیس کی سماعت بیس جون تک ملتوی کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں