The news is by your side.

Advertisement

سندھ حکومت کو کے الیکٹرک بلوں میں ٹیکس وصول کرنے کی اجازت نہیں دیں گے، اسد عمر

کراچی : وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کا کہنا ہے کہ حماد اظہرنےکہا کے الیکٹرک بلوں میں ٹیکس وصول کرنےکی اجازت نہیں دیں گے، وزیر اعلی سندھ نے وفاق سے بات چیت ہونے کہا ،اس میں سچ نہیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے پریس کا نفرنس میں کراچی میں جاری ترقیاتی منصوبوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ کراچی کےلیےگرین لائنز پہلا جدید ٹرانسپورٹ منصوبہ ہےجومکمل ہوچکاہے، منصوبےکےلیےبس ڈپومکمل ہوسکاہے،اس کے22اسٹیشن ہوں گے۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ کراچی کےتمام ٹرانسپورٹ منصوبوں کےلیےکنٹرول سینٹرمکمل ہوچکاہے، بس کےٹرانسپورٹ سسٹم کےلیےآئی ٹی ایس نظام اکتوبرمیں مکمل ہوجائےگا سیکیورٹی کے لیے نظام وضع کیاجاچکاہے،9دن بعداہلکارتعیناہوجائیں گے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ گرین لائن کےلیےڈرائیوروں کوبھرتی کیاجائےگا، آئندہ اتوار تک 40بسیں کراچی پہنچ جائیں گی ، جس کے بعد 6سےآٹھ ہفتےکےاندرگرین لائن کےآپریشن کا آغاز کر دیا جائے گا۔

نالوں کی صفائی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ 11لاکھ ٹن موادنالوں سےاٹھایاجائےگا، نالوں کےساتھ فٹ پاتھ ،سڑکیں اورانڈرپاس بنائےجارہےہیں، نالوں کےساتھ 55 سے 60 کلو میٹر کے سڑکیں بنائی جائیں گی، اس مقصدکےلیے34.5ارب کےفنڈمختص کیےگئےہیں ، اورنگی میں 97فیصدتجاورزات ہٹائی جاچکی ہیں، گجرنالےپرتجاوزات ہٹانےکا60فیصدکام ہوچکا ہے۔

کراچی سرکلرریلوے منصوبے سے متعلق اسد عمر نے کہا کہ کراچی سرکلرریلوےکامنصوبہ میرےکےدل بہت قریب ہے، میں ماضی میں سرکلرریلوےکےذریعےاسکول جاتاتھا، بہت سے لوگ کہتےہیں کہ سرکلرریلوےکانظام نہیں چل سکتا، سرکلرریلوےکانظام43کلومیٹرپرمشتمل ہے،29کلومیٹرایلی ویٹڈہوگا، 22اسٹیشن سرکلرریلوےکاحصہ ہونگے،4لاکھ سے زائد مسافر فائدہ اٹھائیں گے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اپنی حدپرسرکلر نظام سے10لاکھ افرادمستفیدہوسکیں گے، سرکلرنظام چلانےکےلیے27ارب کاتخمینہ لگایاگیاہے، اس میں سے6ارب سندھ حکومت باقی وفاق دے گا، وزیراعظم 30ستمبرسےپہلےکراچی آکرسرکلرریلوےکےانفرااسٹرکچرتعمیرکاافتتاح کرٰیں گے۔

انھوں نے مزید کہا کہ نظام پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ کےتحت چلانےکاانتظام کیاجارہاہے، چیف جسٹس سپریم کورٹ کاشکریہ انہوں نےکےسی آرپراہم فیصلے کیے، کراچی سرکلرریلوےکی کامیابی میں چیف جسٹس سپریم کورٹ کابھی حصہ ہوگا۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ اکتوبرمیں ٹریڈکوریڈورمنصوبےپرکام بھی شروع کردیں گے، اس کےلیےالگ سےایک ریلوےٹریک پیپری تک بچھایاجائےگا، منصوبے پرلگ بھگ 27ارب کی لاگت آئے گی۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ کراچی میں 4پانچ بڑےایسےکام کرنےہیں جس میں سرمایہ کاری سےگریزکیاجاتارہا، پاکستان کی نصف برآمدات کراچی سےبھیجی جاتی ہیں، وزیراعظم کراچی کے چیمپئن اوراس کے حق کے لیے لبیک کہنے والےہیں۔

کے فور منصوبے سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ 26کروڑگیلن پانی کی اسکیم کے4سالوں سےتاخیرکاشکارتھی، اکتوبر2023تک کے4سےکراچی کوپانی ملنا شروع ہوجائےگا، کوشش کی جا رہی ہےکہ منصوبہ اگست2023تک مکمل ہوجائےگا، کے4بہت بڑامنصوبہ ہےلاگت کاتخمینہ ابھی نہیں دے سکتا۔

اسد عمر نے مزید بتایا کہ کراچی میں چھوٹی اسکیموں کےلیے21ارب روپےمختص کیےگئےہیں، وفاق کافیصلہ ہےکہ کراچی کےلیےچھوٹےچھوٹےکام بھی کریں گے، کراچی میں 11لاکھ کچرااٹھانےکی ذمےداری وفاق نےلی ، حکومت سندھ کی مرضی سے یہ کچرااٹھائیں گے۔

انھوں نے سندھ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وفاق نےگزشتہ سال سندھ کےلیے65ارب اورکراچی کو7ارب دیے جبکہ کراچی کیلئے10ارب روپے سے زائدکی ویکسین دےچکی ہے، کراچی کےشہریوں کو10ارب سےزائدکی کورونا ویکسین دی گئی، شہریوں کوحکومت سندھ ایک ٹیکہ بھی نہیں دے سکی، کراچی میں شہریوں کو25ارب سےزائدکی کوروناویکسین لگائی جائے گی۔

مردم شماری کے حوالے سے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ کراچی کادیرینہ مطالبہ رہاہےکہ مردم شماری جائزنہیں ہوتی، مردم شماری ٹھیک نہ ہونےکامؤقف دیگر علاقوں کابھی ہے، پرویزمشرف وردی میں ہوتےہوئےبھی مردم شماری نہ کراسکے، ردم شماری کامعاملہ سی سی آئی میں لےکرگئےکہ اس پرسوالیہ نشان ہیں، مردم شماری کےنتائج مستردکرتےتوکراچی کی نشستیں98والی ہوتیں۔

انھوں نے کہا کہ ہم نےمردم شماری کےنتائج کوقبول کیااورکہا نئی مردم شماری کرائیں گے، ہم ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کواستعمال کرتےہوئےمردم شماری کرائیں گے، ہم مردم شماری میں دونمبری نہیں کرناچاہتے، امیدہےکہ کابینہ اپنی سفارشات سی سی آئی کوبھیج دےگی۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ ہماری کوشش ہےکہ 2023کاالیکشن نئی مردم شماری کی بنیادپرہو، عمران خان پہلی باردوسری مرتبہ مسلسل منتخب ہونے والے وزیراعظم ہوں گے۔

سندھ حکومت کے بجلی کے بلوں میں ٹیکس وصولی پر وفاقی وزیر نے کہا کہ میری حماد اظہر سےبات ہوئی ہے ، کے الیکٹرک کے بلوں میں کوئی اضافی ٹیکس نہیں لگےگا، ہم کے الیکٹرک اور کے ایم سی کو اس اجازت بالکل نہیں دیں گے،وزیر اعلی سندھ نے وفاق سے بات چیت ہونے کہا ،اس میں سچ نہیں ۔

Comments

یہ بھی پڑھیں