The news is by your side.

Advertisement

اشرف طائی میچ فکسنگ کے بیان سے مکر گئے

کراچی : مارشل آرٹس کے گرینڈ ماسٹر اشرف طائی نے 34 سال بعد میچ فکسنگ کا اعتراف کیا اور پھر صفائیاں بھی دے ڈالیں، کہتے ہیں ایسی فائٹس فکسڈ نہیں طے شدہ ہوتی ہیں اس لیے پانچ لاکھ ڈالر حاصل کر کے میچ ہار گیا تھا۔

ashraf-post

طویل عرصے بعد گرینڈ ماسٹر اشرف طائی نے اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ جرمن فائٹر ہارورڈ جیکسن کیخلاف ڈیمو فائٹ میں پیسے لیے اور مار بھی خوب کھائی، تنقید شروع ہوئی تو اشرف طائی بیان کی وضاحتیں کرنےلگے۔

اشرف طائی نے کہا کہ میچ فکس نہیں تھی بلکہ ڈیمو فائٹ تھی جس کا مقصد کسی کو پروموٹ کرنا ہوتا ہے، اشرف طائی نے دعوٰی کیا کہ جان بوجھ کر ہارنے کے پیسوں سے علاج کرایا، باقی پیسے سماجی ادارے کودے دیئے۔

یاد رہے کہ اشرف طائی کو حکومت پاکستان کی جانب سے پرائیڈ آف پرفارمنس کے اعزاز سے نوازا گیا ہے جبکہ وہ 2 بار ایفر ایشین چیمپئن رہنے کے ساتھ ساتھ قومی کراٹے چیمپئن بھی رہ چکے ہیں۔

قبل ازیں عالمی دنیا میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے مارشل آرٹ اشرف طائی نے اعتراف تھا کہ انہوں نے 1983 میں جرمنی کے ہوورڈ جیکسن کے خلاف میچ فکس کیا اور میچ ہارنے کے عوض اُس وقت 5 لاکھ ڈالرز حاصل کیے۔ اشرف طائی نے جس فائٹ کا ذکر کیا وہ کوئی ٹائٹل فائٹ نہیں تاہم انہوں نے یہ مقابلہ پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے کیا تھا۔

بعد ازاں اہلیہ نے اشرف طائی پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے کہا کہ اُن کے شوہر نشے کے عادی ہیں اور وہ مجھے قتل کرنا چاہتے ہیں، انہوں نے حکومت سے اپیل کی کہ وہ اشرف طائی کو دئے گئے سرکاری اعزاز کو واپس لیں اور اعتراف جرم پر سخت سزا بھی دیں۔

دوسری جانب اشرف طائی نے بیوی کی جانب سے عائد ہونے والے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ میرے لیے بچے بہت اہم ہیں اور میں وکیل سے مشورے کے بعد انہیں قانونی طریقہ کار کے بعد اپنے پاس لاؤں گا، نشے کی بات پر انہوں نے کہا کہ اگر میں کسی بھی قسم کے نشے کا عادہ ہوتا تو میڈیا سے اتنی توجہ کے ساتھ بات نہیں کرتا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں