The news is by your side.

Advertisement

امریکا سے مذاکراتی دور بےسود ثابت، چینی درآمدات پر مزید اضافی ٹیکس عاید

واشنگٹن: امریکا اور چین کے درمیان جاری مذاکراتی دور بے سود ثابت ہوئے، صدر ٹرمپ نے ایک بار پھر چینی درآمدات پر اضافی ٹیکس عاید کردیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکا اور چین میں تجارتی جنگ شدت اختیار کرگئی، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کی درآمدات پر مزید 10فیصد ٹیکس عاید کردیا ہے۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکا کی جانب سے نئے محصولات کا مقصد چین پر دباؤ ڈالنا ہے تاکہ امریکی شرائط پر تجارتی معاہدہ طے کیا جائے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر صدر ٹرمپ نے آئندہ ماہ چین کے ساتھ تجارتی مذاکرات جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ چین وعدے کے باوجود مزید زرعی مصنوعات خریدنے میں ناکام رہا۔

نئے امریکی ٹیکس پر چین کا ردعمل سامنے نہیں آیا، البتہ ماہرین کا کہنا ہے کہ چین بھی امریکی درآمدات پر جوابی ٹیکس عاید کرسکتا ہے جس سے تجارتی جنگ مزید بڑھے گی۔

تجارتی جنگ کے خاتمے کے لیے ایک بار پھر چینی اور امریکی حکام کا رابطہ

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ کئی مہینوں سے جاری فریقین کے درمیان مذاکرات کسی کام نہیں آئے، ممکن ہے اس امریکی اقدام کے بعد امریکی اور چینی تجارت مزید متاثر ہوگی۔

واضح رہے کہ امریکا اور چین کے صدور کے درمیان ملاقات جاپان میں جی ٹوئنٹی اجلاس کے موقع پر ہوئی تھی۔ ملاقات میں امریکا و چین کے صدور نے مذاکرات کے آغاز پر رضا مندی کا اظہار کیا تھا، جبکہ امریکی صدر نے چین پر عائد 300 بلین ڈالرز کے نئے ٹیرف کے نفاذ کی معطلی کا اعلان بھی کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں